06:07 am
قومی اسمبلی، جنوبی پنجاب صوبہ کے قیام کا بل پیش

قومی اسمبلی، جنوبی پنجاب صوبہ کے قیام کا بل پیش

06:07 am

اسلام آباد(نامہ نگار خصوصی) قومی اسمبلی میں جنوبی پنجاب صوبہ کے قیام کا بل پیش کردیا گیا، مسلم لیگ (ن)،پاکستان پیپلز پارٹی ، ایم کیو ایم اورمسلم لیگ( ق) نے بل کی حمایت کی ہے۔رانا ثنا اللہ نے کہا کہ نئےصوبوں کے قیام کا مطالبہ آتا رہا ہے،2012میں جنوبی پنجاب کا صوبہ بنانے کی قرارداد قومی اسمبلی سے منظور ہوئی تھی جس کے بعد پنجاب اسمبلی سے جنوبی پنجاب اور بہاولپورکو انتظامی بنیادوں پر بنانے کے حوالے سے قرارداد منظور کی گئی تھی ۔پیپلز پارٹی کے سید نوید قمر نے بھی پنجاب میں دو صوبے بنانے کی حمایت کی اور کہا کہ اس بل کو قائمہ کمیٹی کو بھجوایا جائے ۔ مسلم لیگ (ق) کے رہنما وفاقی وزیرچوہدری طارق بشیر چیمہ نے کہا کہ جنوبی پنجاب اور بہالپور ڈویژن پر دو الگ الگ صوبے انتظامی بنیادوں پر بننے چاہیئں،اس کیلئے نیشنل کمیشن کا قیام بہت ضروری جو کہ ہر چیز کا جائزہ لے، تخت لاہور نے ملک کو برباد کر دیا،ہم لاہور کے ساتھ نہیں رہنا چاہتے،تخت لاہور کے بعد ہم تخت ملتان کے بھی جوتے نہیں کھانا چاہتے۔ملک محمد عامر ڈوگر نے کہا کہ تخت لاہور نے ہمیں بہت مایوس کیا،جنوبی پنجاب کا سیکرٹریٹ ماہ جولائی میں قائم ہو جائیگا۔مسلم لیگ( ن) کے رہنما احسن اقبال نے کہا کہ جنوبی پنجاب والوں کے لیے آج بڑا دن ہے، تحریک انصاف صوبہ بنانے کو سازش سمجھتی ہے تو سمجھے۔ متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) کے اقبال محمد علی نے کہا کہ جنوبی پنجاب، صوبہ بہاولپور،ہزارہ صوبہ اور جنوبی سندھ صوبہ ہونا چاہیئے۔راجہ پرویز اشرف نے کہا کہ جنوبی پنجاب کے صوبے کے قیام کے متعلق عملی اقدام پیپلز پارٹی نے اٹھایا تھا،یہ صوبے انتظامی بنیادوں پر بننے چاہیئں۔ بل پیش