06:08 am
موسمیاتی تبدیلی پاکستان سمیت دنیا کیلئے چیلنج  ہے ، خالد بن مجید

موسمیاتی تبدیلی پاکستان سمیت دنیا کیلئے چیلنج ہے ، خالد بن مجید

06:08 am

اسلام آباد(نمائندہ خصوصی ) اِس وقت موسمیاتی تبدیلی پاکستان سمیت دنیا کیلئے چیلنج بنی ہوئی ہے، انسان اِس تبدیلی کو روک تو نہیں سکتے مگر اِس کے اثرات کو مختلف اقدامات سے کم کرسکتے ہیں ۔ ہلالِ احمر پاکستان نے جرمن ریڈکراس کے اشتراک سے گرین انٹرپرینورشپ کے فروغ کیلئے 8 تعلیمی اداروں کے طلبہ وطالبات کے مابین ’’آئیڈیاز‘‘ شیئرنگ کا مقابلہ منعقد کرایا۔ اِس مقابلہ کی جیوری سات افراد پر مشتمل تھی۔16 کے قریب گروپس نے موسمیاتی تبدیلی کے اثرات سے نمٹنے اور فرینڈلی ماحول کیلئے اپنے اپنے آئیڈیاز پیش کیے۔مقابلہ میں حصہ لینے والے اداروں میں قائداعظم یونیورسٹی، فاطمہ جناح یونیورسٹی، انٹرنیشنل اسلامک یونیورسٹی، نیشنل یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی ، گورنمنٹ کالج لاہور ، سپرئیر یونیورسٹی، فاؤنڈیشن یونیورسٹی شامل تھے۔ پہلی دو پوزیشن نیشنل یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے حصے میں آئیں جبکہ تیسری پوزیشن فاطمہ جناح یونیورسٹی نے حاصل کی۔ جیتنے والے خوش نصیب موسمیاتی تبدیلی کے اثرات سے نمٹنے کیلئے اپنے اپنے منصوبوں پر کام کریں گے۔ انہیں مالی معاونت کی مد میں چیک دیئے گئے ہیں۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سیکرٹری جنرل ہلالِ احمر خالد بن مجیدنے کہا کہ’موسمیاتی تبدیلی‘‘ نے کسی ایک ملک یا علاقے کو متاثر نہیں کیا بلکہ یہ تمام ممالک پر اثرانداز ہورہی ہے۔ سموگ میں اضافہ، درجہ حرارت کا بڑھنا، سیلابوں کا آنا اور غذائی اجناس کی پیداوار میں کمی جیسے مسائل آج پورے خطے کو درپیش ہیں اور یہ بات سامنے آئی ہے کہ دنیا میں موسمیاتی تبدیلی سے متاثر ہونے والے ممالک میں وطنِ عزیز کا دسواں نمبر ہے۔ہلالِ احمر پاکستان جرمن ریڈکراس کے اشتراک سے Climate Advocacy and Coordination for Resilient Action منصوبہ پر کام جاری رکھے ہوئے ہے۔جس کے تحت عوام الناس کو موسمیاتی تبدیلیوں کے اثرات، تدارک سے متعلق آگاہی دینے کے ساتھ ساتھ مستقبل کی پیش بندی بھی کی جاتی ہے۔گرین انٹرپرینورشپ کو فروغ دے کر ہم موسمیاتی تبدیلی کے منفی اثرات سے نمٹ سکتے ہیں ۔ بزنس آئیڈیاز کو سامنے لایا جائے گا۔ موسمیاتی تبدیلیوں سے متعلق معلومات کو پھیلایا جائے گا۔ بزنس کمیونٹی، انویسٹرز اور کاروبار کی شروعات کرنے والے افراد کو ایک پلیٹ فارم پر لاکر نئے خیالات اور آئیڈیاز کی کھوج کرنے کے ساتھ ساتھ کاروباری حضرات، کاروباری مراکز، دفاتر اور اپنے اردگرد کے ماحول میں موسمیاتی تبدیلیوں کو مدنظر رکھتے ہوئے اقدامات کرنے ہیں جس کیلئے ہلالِ احمر بھرپور معاونت کرے گا۔اِس موقع پرجرمن ریڈکراس کے کلائمیٹ ایڈوائزر ہنس جے ہوسمین ،جوائنٹ ڈائریکٹر آپریشن عبیداللہ خان، فنانس ہیڈ راشد گل، میجر (ر) عرفان، آفتاب علی کے علاوہ دیگر شخصیات موجود تھیں۔پروگرام منیجر کلائمیٹ چینج سید شاہد کاظمی نے تمام شرکاء کا شکریہ ادا کیا او رجیوری میں شامل انعم زیب، صوبیہ، فصیح مہتا، سرمد اقبال، دیدار نبی، ڈاکٹر صوفیہ، ڈاکٹر گلفام کو اعزازی شیلڈ اور تمام شرکاء مقابلہ کو سر ٹیفکیٹ دیئے گئے۔ پہلی پوزیشن لینے والی آمیرا عادل کو 70 ہزار کا چیک، دوسری پوزیشن والی اُشما فاروق کو 50 ہزار اور تیسری پوزیشن والی کائنات راؤ کو 30 ہزار کا چیک دیا گیا۔

تازہ ترین خبریں