10:16 am
شعبہ نرسنگ سٹاف  کم ، کام زیادہ ، مراعات اور ترقی سے محروم، کوئی پرسان حال نہیں،

شعبہ نرسنگ سٹاف کم ، کام زیادہ ، مراعات اور ترقی سے محروم، کوئی پرسان حال نہیں،

10:16 am

N-6(تصویر ہمراہ ہے) میرپور(اوصاف سروے رپورٹ/رشید طالب)ڈویژنل ہیڈ کواٹر ہسپتال میرپور کے ایم ایس ڈاکٹر فاروق احمد نور ، ڈپٹی ایم ایس ڈاکٹر عظیم رتیال ، ڈاکٹر اشفاق احمد راجہ ، ڈاکٹر شہزاد احمد شیخ ، ڈاکٹر ہارون خورشید ، ڈپٹی نرسنگ سپرٹینڈنٹ جمیلہ رجب ، سٹاف نرسز نسرین اختر ، زینب عامر ، ضنیرہ اعظم، سدرہ زبیر،شمس نساء اور تھرڈ ائیر کی طالبات تنزیلہ گلزار ، شمس شوکت اور زرقہ نے کہا ہے کہ شعبہ طب اور ہیلتھ کیئر میں ڈاکٹر ز کے ساتھ ساتھ نرسوں کا کردار کلیدی اور انتہائی اہمیت کا حامل ہے مریضوں کی دیکھ بھال خدمت گذار ی کے فرائض سرانجام دینے والی نرسوں کو شعبہ صحت میں ریڑھ کی ہڈی قرار دیا جاتا ہے نرسیں بلارنگ ونسل اور مذہب دکھی انسانیت کی خدمت کرنا اپنا فرض سمجھتی ہیں تشخیص کے بعد علاج کا سب سے زیادہ عمل دخل نرسنگ کے شعبے سے تعلق رکھتا ہے آدھے سے زیادہ مریض سائیکالوجیکل طور پر نرسنگ سٹاف کے اچھے رویے کی وجہ سے اپنے آپ کو بہتر محسوس کرتے ہیں علاج کے ساتھ اگر نرسنگ سٹاف کارویہ ہمدردانہ ہو تو مریض جلد صحت یاب ہونا شروع ہو جاتا ، نرسوں کو پیشہ وارانہ فرائض کی ادائیگی میں لاتعداد مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے جن پر سنجید ہ توجہ اور انہیں حل کرنے کی ضرورت ہے اس دن کو منانے کا مقصد جہاں نرسنگ سٹاف کو ان کی ذمہ داریوں کا احساس دلانا ہے وہاں نرسوں کا عالمی دن اس بات کا بھی متقاضی ہے کہ انہیں ان کے مقدس پیشے کے حوالے سے خراج تحسین پیش کیا جائے ۔ بطور سربراہ ادارہ میں ڈویژنل ہیڈ کواٹرہسپتال میرپور میں اپنے نرسنگ سٹاف کے کام اور ان کی ڈیوٹی سے پوری طرح مطمئن ہوں تمام نرسنگ سٹاف کا رویہ مجموعی طور پر اطمینان بخش ہے جس پرمیں ان کی کارکردگی کو نہ صرف سراہتا ہوں بلکہ دادبھی دیتا ہوں ۔ 12مئی عالمی نرسنگ ڈے کے موقع پر ہر سال کی طرح اس سال بھی یعنی آج ڈویژنل ہیڈ کواٹر ہسپتال میرپور میں خدمات سرانجام دینے والی نرسنگ سٹاف میں سے ایک نرس کو سال 2019کی بیسٹ نرس کا ایوارڈ دیا جائے گا اور اس مقدس پیشہ سے منسلک نرسنگ سٹاف کی خدمات کو ایکنالج اور خراج تحسین پیش کیا جائے گا ’’اوصاف‘‘ کی کاوش کو سراہتے ہیں کہ جس نے اپنی صحافتی ذمہ داریوں کو محسوس کرتے ہوئے اس دن کی مناسبت سے اظہار خیال کا موقع فراہم کیا ۔ ان خیالات کاا ظہار 12مئی نرسنگ کے عالمی دن کے حوالہ سے ڈاکٹر فاروق احمد نور ، ڈاکٹر عظیم رتیال ، ڈاکٹر اشفاق احمد راجہ ، ڈاکٹر شہزاد احمد شیخ ، ڈاکٹر ہارون خورشید ، محترمہ جمیلہ رجب سٹاف نرسز نسرین اختر، زینب عامر ، خنیزہ اعظم ، سدرہ زبیر،شمس نساء اور تھرڈ ائیر کی طالبات تنزیلہ گلزار ، شمس شوکت اور زرقہ نے ’’اوصاف سرو ے میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ڈپٹی ایم ایس عظیم رتیال اور ڈاکٹر اشفاق احمد راجہ نے کہا کہ نرسنگ ایک مقدس پیشہ اور شعبہ صحت کا مین پلر ہے ۔ نرس کا کردار انتہائی اہمیت کا حامل ہوتا ہے یہ ہسپتال کے ہر شعبے کیلئے ضروری اور لازم وملزوم ہے ایک اچھی نرس میں اپنے شعبے سے کیمٹمنٹ کا عزم مریضوں کی دیکھ بھال اور خیال رکھنے کا شوق وجذبہ ہمدردی اپنے کام سے لگن حوصلہ مندی کی صلاحیت ہونی چاہیے آج کے دن ہم اس شعبہ سے منسلک نرسنگ سٹاف کو ان کی خدمت پر خراج تحسین پیش کرتے ہیں اور امید کرتے ہیں کہ نرسنگ سٹاف کو اپنے پیشے سے پورا پورا انصاف کرتے ہوئے محنت جانفشانی سے کام کرنا چاہیے اور زیادہ سے زیادہ دکھی انسانیت کی خدمت کا فریضہ سرانجام دیناچاہیے ۔ سروے میں ڈاکٹر شہزاد احمد شیخ اور ڈاکٹر ہارون خورشید نے کہا کہ شعبہ صحت میں اگر نرسنگ سٹاف کے بارے میں بات کی جائے تو مریضوں کی صحت ان کی دیکھ بھال کے معاملے میں نرسیں اپنا ایک خاص مقام رکھتیں ہیں انتہائی محنت لگن سے کام کرتی ہیں ہمیں نرسنگ سٹاف کی خدمات کو نہیں بھولنا چاہیے۔ ان کی خدمات کو ایک نالج اور خراج تحسین پیش کرنا چاہیے اس موقع پر ڈپٹی سپرٹینڈنٹ جمیلہ رجب نے کہا کہ حالات چاہے کیسے بھی ہوں امن ہو یا جنگ آفات ارضی ہوں یا سماوی ایک نرس بلاتھکان پوری دلجمی اور جانفشانی سے اپنے فرائض منصبی انجام دیتی ہے دن ہویا رات مریضوں کی دیکھ بھال ان کی خدمت میں مصروف رہتی ہے مگر افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ نرسنگ سٹاف کی خدمات کا بہت چرچا بہت ڈھنڈورا پیٹا جاتا ہے لیکن جب صلہ حق دینے کا وقت آتا ہے تو نرسنگ سٹاف کو وہ حق نہیں دیا جاتا جسکی وہ حقدار ہیں آزاد کشمیر میں نرسنگ سٹاف کو ہمیشہ نظر انداز کیا گیا نرسنگ سٹاف کی مراعات پر موشنزپر کوئی توجہ نہیں دی جاتی ہمارا مطالبہ ہے کہ پنجاب میں نرسنگ سٹاف کو جو سہولیات مراعات حاصل ہیں ان کانفاذ آزاد کشمیر میں بھی ہونا چاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ گوکہ ہم پاکستان نرسنگ کونسل میں رجسٹرڈ ہیں لیکن جو مراعات پنجاب میں نرسنگ سٹاف کو دی جاتی ہیں وہ ہمیں نہیں دی جاتیں اس سلسلے میں ہمارے مطالبات پر سنجیدگی سے غور کرنے کی ضرورت ہے اوصاف کے شگر گزار ہیں کہ انہوں نے اہم ایشو پر بات کرنے کا موقع فراہم کیا ۔ اس موقع ڈویژنل ہیڈ کواٹر ہسپتال میرپور میں بطور سٹاف نرس ڈیوٹی دینے والی نسرین اختر ، زینب عامر ، ضنیزہ اعظم ، سدرہ زبیر ، شمس نساء نے کہا کہ ہمیں اپنے فرائض کی ادائیگی کے دوران شدید زہنی دبائو کا سامنا کرنا پڑتا ہے نرسنگ سٹاف کے عملہ کی کمی کام کی زیادتی ، مریضوں کے لواحقین کے ہتھک امیز رویے کا سامنا اور دیگر کئی طرح کے مسائل سے بھی دو چار ہونا پڑتا ہے جنہیں سنجیدنگی سے دیکھنے اور حل کرنے کی ضرورت ہے انھوں نے کہا کہ تمام تر مسائل کے باوجود ہم اپنے پیشہ وارانہ فرائض اور ڈیوٹی سے غافل نہیں اپنے فرائض منصبی پوری ذمہ داری اور فرض شناسی سے انجام دیتے ہیں ۔ سروے میں ڈویژنل ہیڈ کواٹر ہسپتال میں نرسنگ تھرڈ ائیر کی طالبات تنزیلہ گلزار ، شمس شوکت اور زرقہ نے کہا ہے کہ نرسنگ ایک اہم اور مقدس شعبہ ہے اور خدمت خلق کابہترین ذریعہ ہے ہم نے شوق سے اس شعبہ کا انتخاب کیاتا کہ دکھی انسانیت کی خدمت کر سکیں ۔ ڈاکٹرز

تازہ ترین خبریں