08:57 am
فواد چوہدری کا متنازع بیان، حکومت میں ’اندورنی اختلافات‘ سامنے آگئے

فواد چوہدری کا متنازع بیان، حکومت میں ’اندورنی اختلافات‘ سامنے آگئے

08:57 am

کراچی: وزیرعظم عمران خان کی حکومت میں اہم فیصلوں میں منتخب ممبران کی عدم مشاورت سے متعلق وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری کے بیان سے حکمراں جماعت پاکستان تحریک انصاف پارٹی میں اندورنی اختلافات ابھر کر سامنے آگئے۔وفاقی وزیر فواد چوہدری نے نجی چینل کو انٹرویو میں کہا کہ ’میرا یقین ہے کہ ہماری حکومت کے سیاسی فیصلے کمزور ہیں،
اہم فیصلے لیے جاتے ہیں لیکن ہمیں نہیں معلوم ہوتا، بہتری کی ضرورت ہے کہ کیسے فیصلہ لیا جائے‘۔تقریباً تمام نجی چینلز نے فواد چوہدری کے بیان کو نشر کیا جس کے بعداد حکومتی ترجمان فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ ’تمام فیصلے عمران خان کی قیادت میں پارٹی لیڈر کے ساتھ لیے جاتے ہیں‘۔بعدازاں فواد چوہدری نے ٹریٹر پر کہا کہ میرے انٹرویو پر مبنی ’بعض سرخیاں‘ گمراہ کن تھیں۔انہوں نے وضاحت دی کہ ’فیصلے منتخب ممبران کو لینا چاہیے، غیر منتخب ممبران پر بعض اعتراضات ہیں، جس پر توجہ دینی چاہیے‘۔خیال رہے کہ فواد چوہدری سے اطلاعات و نشریات کی اہم وزارت واپس لے کر انہیں نسبتاً کم اہم سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کی وزارت سونپ دی گئی تھی۔فواد چوہدری نے مزید کہا کہ ’پارلیمنٹ اور منتخب اراکین ہی اصل طاقت ہیں، جنہیں پر آپ سبقت نہیں لے جا سکتے‘۔وفاقی وزیر نے کہا کہ ’آخر کار، فیصلہ وزیراعظم کا ہی ہوتا ہے‘۔کابینہ میں حالیہ تبادلوں سے متعلق انہوں نے اقرار کیا کہ جب وہ وزارت اطلاعات و نشریات کا قلمدان سنبھال رہے تھے تب انہیں غیر منتخب اراکین کی جانب سے مداخلت کا سامنا تھا۔انہوں نے کہا کہ ’بہت سارے لوگ وزارت سنبھالنے کی کوشش کررہے تھے‘۔

تازہ ترین خبریں