07:40 am
خیبرپختونخواہ میں عید الفطر منانے کے سرکاری اعلان کو معروف علمائے کرام نے مسترد کر دیا

خیبرپختونخواہ میں عید الفطر منانے کے سرکاری اعلان کو معروف علمائے کرام نے مسترد کر دیا

07:40 am

پشاور (نیوز ڈیسک )خیبرپختونخواہ میں عید الفطر منانے کے سرکاری اعلان کو معروف علمائے کرام نے مسترد کر دیا ۔ تفصیلات کے مطابق خیبرپختونخواہ میں صرف 28 روزوں کے بعد عیدالفطر منانے کا اعلان کردیا گیا جس کے بعد صوبہ بھر میں جگہ جگہ نماز کے اجتماعات ادا کئے گئے۔ تاہم ملک کے معروف اور ممتاز علمائے کرام نے صوبائی حکومت کے اس اعلان پر اعتراض اُٹھاتے ہوئے اسے مسترد کر دیا۔مفتی زبیرکا کہنا تھا
کہ مرکزی رویت ہلال کمیٹی کے ہوتے ہوئے ایک مسجد کی انتظامیہ کے کہنے پر صوبائی حکومت نے کیسے اعلان کردیا؟ مفتی نعیم نے کہا کہ ریاست کی قائم کردہ کمیٹی کی موجودگی میں عید کا اعلان کر کے صوبائی حکومت کیا ریاست میں اختلاف پیدا کرنا چاہتی ہے؟ ایبٹ آباد کی جامع مسجد صدیق شریفی کے خطیب علامہ سعیداللہ ہزاروی نے کہا کہ آج ہزارہ ڈویژن میں 29 واں روزہ ہوگا۔خیال رہے کہ گذشتہ روز وزیر اطلاعات خیبرپختونخواہ شوکت یوسفزئی نے کہا تھا کہ مسجد قاسم علی خان کو 112 سے زیادہ شہادتیں موصول ہوئیں، وزیراعلیٰ خیبرپختونخواہ نے اظہار یکجہتی کے لیے منگل کے روز عید منانے کا اعلان کیا۔ پشاور میں عید گاہ چارسدہ روڈ اور مسجد مہابت خان میں بڑے اجتماع ہوئے، گورنر اور وزیراعلیٰ خیبرپختونخواہ نے بھی فرض ادا کرلیا۔خیبرپختونخواہ کے دیگر علاقوں میں بھی نماز عید کی ادائیگی کی گئی۔ ملک کی سلامتی اور عالم اسلام کے اتحاد کے لیے خصوصی دعائیں مانگی گئیں۔ شمالی وزیرستان سمیت قبائلی اضلاع میں بھی بڑے اجتماعات ہوئے، پارہ چنار کے شہریوں نے وفاق کے ساتھ عید منانے کا اعلان کیا۔ ایبٹ آباد سمیت ہزارہ ڈویژن کے عوام نے خیبر پختونخوا حکومت کے اعلان کو مسترد کر دیا، لوگوں نے وفاق کے ساتھ عید منانے کا اعلان کیا۔ ٹانک میں بھی آج انتیسواں روزہ رکھا گیا، ڈیرہ اسماعیل خان میں بھی تقسیم دیکھنے میں آئی۔ ہر سال کی طرح اس سال بھی وفاق ناکام رہی اور پاکستانیوں نے دو عیدیں منائیں۔

تازہ ترین خبریں