09:46 am
انٹرپول کے ذریعے اسحاق ڈار کو وطن واپس لانے کی تیاریاں مکمل

انٹرپول کے ذریعے اسحاق ڈار کو وطن واپس لانے کی تیاریاں مکمل

09:46 am

اسلام آباد (نیو زڈیسک) نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما شوکت بسرا نے کہا کہ شہباز شریف وطن واپس آ گئے ہیں ، اُن کے پاس کوئی آپشن نہیں تھی انہیں واپس آنا ہی پڑنا تھا۔ انہوں نے کہا کہ اگر شہباز شریف وطن واپس نہ آتے تو حکومت یقنی طور پر انٹرپول کے ذریعے ان کو واپس لاتی۔ پاکستان اور یو کے کی حکومت کے مابین ایک معاہدے پر دستخط ہو گئے ہیں
جس کے تحت اب جو بھی اسکالرز ہوں گے ، جو بھی لوگ مطلوب ہوں چاہے وہ مجرم ہوں یا ملزم، دونوں ممالک سے لائے جا سکتے ہیں۔میاں شہباز شریف وطن واپس ہرگز نہ آتے اگر حکومت کا یو کے کی حکومت کے ساتھ یہ معاہدہ طے نہ پایا ہوتا۔ آپ دیکھیں گے کہ کچھ دنوں تک اسحاق ڈار کو انٹرپول کے ذریعے واپس لایا جائے گا جس کے بعد حسن نواز اور حسین نواز کی باری آئے گی۔انہوں نے کہا کہ تھوڑا صبر رکھیں، دونوں ممالک کی حکومتوں کے مابین جو نیا معاہدہ طے پایا ہے اُس کے بعد سب کو پتہ چل جائے گا۔واضح رہے کہ سابق وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار علاج کی غرض سے لندن گئے تھے اور پھر واپس نہیں آئے۔سحاق ڈار سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کے سمدھی ہیں اور سپریم کورٹ نے ایک مقدمے میں اسحاق ڈار کی سینیٹ کی رکنیت معطل کر رکھی ہے۔ اسحاق ڈار کو عدالت نے کئی مرتبہ طلب کیا لیکن وہ وطن واپس نہیں آئے جس کے بعد انہیں مفرور قرار دے دیا گیا تھا۔ تب سے اب تک اسحاق ڈار کبھی لندن اور کبھی امریکہ میں قیام کرتے ہیں۔ البتہ انہوں نے حال ہی میں ملکی معاشی صورتحال پر ویڈیو پیغام کے ذریعے قوم کو آگاہی دینے کا فیصلہ کیا تھا ، جس کے بعد سے وہ اکثر و بیشتر سماجی رابطے کی ویب سائٹس پر ویڈیو پیغام جاری کرتے ہیں اور موجودہ حکومت کو معیشت پر کئی تجاویز بھی دیتے ہیں۔

تازہ ترین خبریں