08:50 am
الیکشن کمیشن کے ممبران کی عدم تعیناتی، حکومت سپریم کورٹ جائیگی

الیکشن کمیشن کے ممبران کی عدم تعیناتی، حکومت سپریم کورٹ جائیگی

08:50 am

اسلام آباد (مانیٹر نگ ڈیسک )الیکشن کمیشن کے ممبر سندھ اور ممبر بلوچستان کی تعیناتی کے معاملے پر حکومت نے سپریم کورٹ جانے کا فیصلہ کرلیا ہے۔وزیراعظم کے مشیر برائے سیاسی امور نعیم الحق نے کہا ہے کہ ممبران  الیکشن کمیشن کی تعیناتی سے متعلق بنائی گئی پارلیمانی کمیٹی ڈید لاک کا شکار ہے۔انہوں نے کہاکہ  وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر کے مابین اس معاملے پر اتفاق رائے نہیں ہوسکاہے،ڈیڈلاک کے بعد کیا کیا جائے آئین خاموش ہے؟
سوشل میڈیا پر شئیر کیے جانے والے ایک وڈیو بیان میں نعیم الحق نے کہا ہے کہ ہم اس معاملے سے سپریم کورٹ سے رجوع کررہے ہیں،سپریم کورٹ ہمیں بتائے ان سیٹوں کو کیسے پر کیا جائے؟گزشتہ روز ہونے والے پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں حکومتی اور اپوزیشن جماعتوں کے نامو پر اتفاق نہیں ہوسکا تھا۔ پیپلزپارٹی کے رہنما سید خورشید شاہ نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کو بتایا تھاکہ معاملہ اب چئیرمین سینیٹ اور اسپیکرقومی اسمبلی کے پاس جائیگا۔انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے حکومت سے نئے نام بھی مانگے جاسکتے ہیں۔میڈیا رپورٹس کے مطابق اپوزیشن لیڈر شہبازشریف کی جانب سے سندھ سے سینئر وکیل خالد جاوید، جسٹس (ر) عبدالرسول میمن اور جسٹس (ر) نور الحق قریشی جب کہ بلوچستان سے صلاح الدین مینگل، شاہ محمد جتوئی اور روف عطاء کا نام تجویز کیا گیا ہے۔وزیراعظم عمران خان نے بلوچستان کے الیکشن کمیشن کے ممبر کے لیے امان اللہ بلوچ، منیر کاکڑ اور نوید جان بلوچ کے نام تجویز کیے تھے جب کہ سندھ کے لیے خالد صدیقی، فرخ ضیاء شیخ اور ایاز محمود کے نام دیے گئے۔

تازہ ترین خبریں