04:19 pm
پاکستان کو چونا لگانے والوں نے برطانیہ کو بھی نہ بخشا،

پاکستان کو چونا لگانے والوں نے برطانیہ کو بھی نہ بخشا،

04:19 pm

فیصل آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) نئے مبینہ کرپشن سکینڈل پر ترجمان وزیراعلیٰ پنجاب ڈاکٹر شہباز گل نے کہا ہے کہ کرپشن کرنے میں شہباز شریف کا کوئی ثانی نہیں ایک چوری اور پھر سینہ زوری، خود کو خادم اعلیٰ کہنے والوں کو شرم نہیں آتی، برطانوی اخبار نے ان کا اصل چہرہ بے نقاب کر دیا۔ڈاکٹر شہباز گل کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ زلزلہ زدگان کی بحالی اور امداد کے لیے بیرون ملک سے آئی امداد کو بھی نہ چھوڑا،
ان کے بلند وبانگ دعوے سنیں اور ان کے کرتوت دیکھیں۔ان کا کہنا تھا کہ شہباز شریف ٹھیک کہتے رہے کہ انھوں نے ایک دھیلے کی کرپشن نہیں کی، ان کی کرپشن تو اربوں روپے کی ہے، برطانوی اخبار نے بتا دیا کس طرح شہباز شریف اور ان کے خاندان کے لوگ منی لانڈرنگ کرتے رہے۔انہوں نے کہا کہ شہباز شریف، ان کے صاحبزادے اور داماد عوامی دولت دونوں ہاتھوں سے لوٹتے رہے۔ اپنی تجوریاں بھرنے والوں نے پنجاب کو دیوالیہ کر دیا۔ پنجاب کے عوام کے خون پسینے کی کمائی کو شریف خاندان نے بے دردی سے لوٹا۔ وقت ثابت کر رہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کا چووروں کو بے نقاب کرنے کا عمل درست ہے۔ عمران خان مگر مچھوں کو نہیں چھوڑے گا، کوئی نہیں بچے گا۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں حکومت اور اپوزیشن کی نورا کشتی ہوتی تھی۔ انہوں نے کہا کہ جج کے بیان حلفی کے بعد ن لیگ والے زیادہ پھنس گئے ہیں۔ یہ لوگ مافیا ہیں جنہوں نے رشوت کی پیشکش کی دھمکیاں دیں۔جیل والے چیک کر کے نہ بھیجیں تو جیل کا سامان چوری کر لیں گے۔ شہبازگل نے کہا کہ پنجاب میں اپوزیشن کے40 سے45 ایم پی ایزہمارے ساتھ ہیں۔ دوسری جانب صوبائی وزیر اوقاف پیر سید سعید الحسن شاہ سے تاجروں کے وفد نے ملاقات کی۔اس موقع پر انہوں نے کہا کہ چینی سرمایہ کار دونوں ممالک کی تقدیر بدلنے والے اس تاریخ ساز پروجیکٹ میں بھر پور سرمایہ کاری کے لیے پرعزم ہیں۔پاکستانی تاجرحضرات معیشت میں ترقی کے لئے اپنا اپنا کردار بخوبی نبھا رہے ہیں۔ معیشت کی بحالی برآمدات میں اضافے ، درآمدات میں کمی اور مقامی مصنوعات سے استفادے کی متقاضی ہے ۔ ملک کو انتشار کا شکارکرنے والی قوتیں خود اپنی موت مر جائیں گی ۔ تعلیم، صحت، کاروبار اور روزگار کی فراہمی کو حکومت اپنا اولین مشن بنائے ہوئے ہے۔ حکومت سرمایہ کاروں کے مسائل ہر سطح پر حل کر رہی ہے ۔موجودہ حکومت کاروبار میں آسانی، صنعت و سرمایہ کاری کے فروغ کے لیے جو اقدامات اُٹھا رہی ہے ماضی میں ان کے صرف خواب دکھائے گئے۔سی پیک منصوبہ پاکستان کی قسمت کا ستارہ ہے۔اور جلد ہر پاکستانی کے ماتھے کا جھومر بنے گا۔ پنجاب پاک چائینہ سی پیک پاکستان اور چائنہ کے عوام کی تقدیر سنوارنے کا تاریخ ساز منصوبہ ہے۔جس کا بنیادی فوکس دونوں ممالک کے درمیان مضبوط، پائیدار اور مستحکم اقتصادی روایت کو مزید ٹھوس خطوط پر استوار کیا جا رہا ہے۔اس مقصد کے حصول کے لئے کاروبار کرنے کے لیے سازگار ماحول کی فراہمی کے لیے موثر اقدامات عمل میں لائے گئے ہیں۔ پنجاب میں 68000 انڈسٹری یونٹ کام کر رہے ہیں۔ پنجاب میں 3 اکنامک زون اعلان کیا جا چکا ہے جبکہ 7 پائپ لائن میں ہیں۔ پنجاب میں بہت سی چائینز کمپنیاں مجوزہ اکنامک ذون میں کام کر رہی ہیں۔ پنجاب میں انفراسٹرکچر میں بہتری ہو رہی ہے اور اس وقت زراعت پر مشتمل منصوبے، انڈسٹری، فوڈ پراسیسنگ، کم لاگت ہاوسنگ منصوبے، لائیو سٹاک، ڈئیری، آٹو مینوفیکچرنگ، ہیلتھ اور ایجوکیشن سیکٹر میں انویسٹرز کے لیے پر کشش مواقع موجود ہیں۔علامہ اقبال انڈسٹریل سٹی فیصل آباد سی پیک فریم ورک کے تحت ایک ایسا منصوکے بہ ہے جس میں فوری طور پر سرمایہ کاری کی جاسکتی ہے۔

تازہ ترین خبریں