09:32 am
دن کے آغاز میں پاکستانیوں کیلئے انتہائی افسوسناک خبر

دن کے آغاز میں پاکستانیوں کیلئے انتہائی افسوسناک خبر

09:32 am

کراچی(نیوز ڈیسک) دن کے آغاز میں پاکستانیوں کیلئے انتہائی افسوسناک خبر ۔۔۔۔پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروباری ہفتے کے پہلے روز پیر کواتارچڑھائو کے بعدزبردست مندی رہی اورکے ایس ای100انڈیکس33600،33500،33400،33300،33200،33100اور33000کی نفسیاتی حدوں سے گرگیا،مندی کے نتیجے میںسرمایہ کاروں کے 1کھرب15ارب6کروڑ روپے سے زائدڈوب گئے ،کاروباری حجم گذشتہ روزکی نسبت24.64فیصدزائدجبکہ86.60فیصد حصص کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کی گئی۔ملکی کرنسی مارکیٹوں میں امریکی ڈالر کے مقابلے میں پاکستانی روپے کی بے قدری،وفاقی بجٹ 2019-20میں ٹریڈرز کے تحفظات ،فروخت کے دبائو
اور پرافٹ ٹیکنگ کے باعث مقامی سرمایہ کار تذبذب کا شکار نظرآئے اور سرمایہ کاری سے گریزکیا، جس کے نتیجے میں کاروبار کا آغاز منفی زون میں ہوا۔مجموعی طور پر 292 میں سے 247 کمپنیوں کے کاروبار میں تنزلی جبکہ 35 کے کاروبار میں تیزی اور 10 کمپنیوں کے کاروبار میں کوئی تبدیلی نہیں آئی۔کمپنیوں کے انفرادی کاروبار میں میپل لیف سیمنٹ فیکٹری لمیٹڈ (ایم ایل سی ایف) 55 لاکھ حصص کے کاروبار کے ساتھ سرفہرست رہی، ٹی آر جی پاکستان لمیٹڈ اور کے-الیکٹرک بالترتیب 53 لاکھ اور 45 لاکھ حصص کے کاروبار کے ساتھ دوسرے اور تیسرے نمبر پررہیں۔تجزیہ نگار محمد فیضان کا کہنا تھا کہ ‘مارکیٹ میں کاروبار کا آغاز منفی رجحان سے ہوا جو جمعے کے روز ہونے والی تنزلی کا تسلسل تھا اور ہہ سلسلہ دن بھر جاری رہا جس کی وجہ شرح سود میں اضافے کے حوالے سے گردش کرنے والی خبر تھی’۔ان کا کہنا تھا کہ ‘مارکیٹ میں گزشتہ سیشن کے مقابلے میں 52 لاکھ حصص کا اضافہ ہوا تھا جو روزانہ کی بنیاد پر 20 فیصد کا اضافہ ہے’۔تجزیہ نگار شنکر تلریجا کا کہنا تھا کہ مارکیٹ گزشتہ 39 ماہ کی کم ترین سطح پر پہنچ چکی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ‘شرح سود میں اضافے کی صورت میں سرمایہ کار سیونگز سرٹیفکیٹس کی طرح سرمایے کو فکس کردیں گے اور مارکیٹ میں تنزلی کی وجہ یہی ہے’۔

تازہ ترین خبریں