12:26 pm
قبروں پر ٹیکس عائد کرنے کا معاملہ،عوامی ردعمل کے بعد اہم فیصلہ کرلیا گیا

قبروں پر ٹیکس عائد کرنے کا معاملہ،عوامی ردعمل کے بعد اہم فیصلہ کرلیا گیا

12:26 pm

لاہور (نیوز ڈیسک)نئے پاکستان میں قبرستان مین میت دفنانے پر بھی ٹیکس عائد کرنے کی تجویز پیش کر دی گئی تھی تاہم اب قبروں ہر ٹیکس عائد کرنے کی تجویز مسترد کر دی گئی۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ عوامی ردعمل رنگ لے آیا ہے۔ قبروں پر ٹیکس عائد کرنے کی تجویز مسترد کر دی گئی ہے۔نئے قواعد میں قبروں پر ٹیکس عائد کرنے کی شق اڑا دی گئی۔میٹروپولیٹن کارپوریشن کے نئے بالاز میں قبروں پر ٹیکس عائد نہیں کیا گیا
۔تمام قبرستان ایم سی ایل کے سپرد ہوں گے۔ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ قبر کے لیے کمیٹی کی اجازت لازمی قرار دی گئی ہے۔خیال رہے اس سے قبل میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا تھا کہ لاہور میٹرو پولیٹن کارپوریشن نے اپنے زیرِ انتظام آنے والے قبرستانوں میں ٹیکس عائد کرنے کی تجاویز منظوری کے لیے لوکل گورنمنٹ کو بھجوا دی ہیں۔زیر غور تجاویز میں یہ مؤقف اختیار کیا گیا کہ ٹیکس سے اکٹھی ہونے والی رقم کو قبرستانوں کی دیکھ بھال کے لیے خرچ کیا جائے گا۔ عام طور پر قبرستان میں جگہ کاکرایہ اور تدفین کے انتظامات ملا کر تقریبا 10 ہزار تک اخراجات آتے ہیں لیکن اب یہ ٹیکس بھی عوام کو دینا پڑے گا۔ اس حوالے سے باقاعدہ ایک مراسلہ بھجوایا گیا جس کے تحت قبرستانوں پر ایک کمیٹی بنائی جائے گی۔کمیٹی کی صدارت چئیرمین کریں گے جس میں باقاعدہ تدفین کے گھنٹے سمیت فاتحہ خوانی کرنے والوں کےلیے بھی وقت مقرر کیا جائے گا۔ اس مراسلے کے مطابق بچوں کی قبر پر ایک ہزار روپے اور بڑوں کی قبر پر 1500 روپے ٹیکس عائد ہوگا۔ جبکہ قبروں پر فاتحہ خوانی کرنے والے افراد صبح ساڑھے 8 بجے سے شام ساڑھے 5 بجے تک قبرستان آسکیں گے اور مقررہ وقت کے بعد قبرستان میں داخلے کی اجازت نہیں ہوگی۔ کمیٹی قبر کی گہرائی، لمبائی اور چوڑائی کا بھی تعین کرے گی۔ یہ خبر سامنے آنے پر شہریوں نے بھی حکومت کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا ، سوشل میڈیا پر بھی اس حوالے سے تنقید بڑھی تاہم ترجمان وزیراعلیٰ پنجاب نے اس حوالے سے تمام خبروں کی تردید کر دی تھی۔

تازہ ترین خبریں