10:25 am
شہباز شریف اور مریم نواز کی گرفتاری کے بعد مسلم لیگ ن کی قیادت کون سنبھالے گا

شہباز شریف اور مریم نواز کی گرفتاری کے بعد مسلم لیگ ن کی قیادت کون سنبھالے گا

10:25 am

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)نجی ٹی وی چینل پر بات کرتے ہوئے سینئیر صحافی رانا عظیم نے کہا کہ شہباز شریف اور مریم نواز کے خلاف نیب کو منی لانڈرنگ کے اتنے زیادہ شواہد مل چکے ہیں کہ جس کی انتہا نہیں ہے۔ میں پھر کہہ رہا ہوں کہ عباس شریف کے ایک بیٹے نے دوران تفتیش اس حوالے سے کافی انکشافات بھی کیے ہیں مزید انکشافات عباس شریف کے دوسرے بیٹے کی نیب پیشی پر متوقع ہیں۔ رانا عظیم نے کہا کہ یہ چیز ثابت ہو چکی ہے کہ صرف شہباز شریف ، حمزہ ، حسن اور حسین نہیں بلکہ مریم نواز بھی منی لانڈرنگ میں ملوث ہیں ۔
ان کے خلاف پیسہ باہر بھیجنے اور بے نامی جائیدادیں بنائی گئیں اس حوالے سے ثبوت حاصل کر لیے گئے ہیں۔ لاہور کے ایک ایم این اے اور ایم پی اے بھائی کے نام کس طریقے سے جائیدادیں کی گئیں، ان کے ساتھ کس کس پراپرٹی میں ان کے شئیر ہیں، کس طرح پیسہ باہر بھیجا گیا اور پھر چودھری شوگر ملز سمیت دیگر ملز پر لگایا گیا۔ انہوں نے کہا کہ نیب کو اس حوالے سے کافی اہم شواہد اکٹھا کر لیے ہیں کچھ دن قبل بھی نیب نے کچھ دستاویزات حاصل کر لیے ہیں۔ دوسری جانب ویڈیو اسکینڈل میں بھی شہباز شریف اور مریم نواز کی گرفتاری کا قوی امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کیونکہ شک سیدھا ان پر ہی جا رہا ہے۔ ویڈیو کی خرید و فروخت اور اس حوالے سے منی ٹرانزیکشنز پر بھہ اہم ترین شواہد مل چکے ہیں۔اب ان کی گرفتاری کی صورت میں بقول مریم اورنگزیب اور احسن اقبال کے مسلم لیگ ن کی متبادل قیادت تیار ہے۔ متبادل قیادت کے حوالے سے بھی مسلم لیگ ن میں کافی پھوٹ پڑ چکی ہے۔ شہباز شریف کا انتخاب رانا تنویر ہیں اور وہ چاہتے ہیں کہ اگر مجھے کچھ ہو گیا تو فوری طور پر رانا تنویر پارٹی کی کمان سنبھالیں گے۔ لیکن مریم نواز اور نواز شریف کا خیال ہے کہ اگر مریم نواز کی گرفتاری ہو جائے تو فوری طور پر خواجہ آصف پارٹی کی کمان سنبھالیں گے کیونکہ رانا تنویر سے متعلق ان کا خیال ہے کہ وہ چودھری نثار علی خان کے بہت قریب ہیں۔ اور وہ اُن کے رابطے میاں شہباز شریف کی طرح دوسرے اطراف میں بھی ہیں لہٰذا انہیں اس طرح سے آگے نہیں لانا چاہتے۔ بظاہر اندر سے یہ لوگ ایک ہی نظر آ رہے ہیں حالانکہ ان کے اندر شدید اختلافات ہیں، کیونکہ ہر شخص چاہتا ہے کہ متبادل قیادت کے طور پر میں سامنے آجاؤں۔ہمیں تو یہ بھی پتہ چلے کہ ہو سکتا ہے کہ شہباز شریف کچھ دنوں میں ایک درخواست دیں اور کہیں کہ میں علاج کی غرض سے پاکستان سے باہر جانا چاہتا ہوں کیونکہ آج کل وہ جہاں بھی جا رہے ہیں ایک ہی بات کر رہے ہیں کہ میری کمر میں کافی تکلیف ہے ۔

تازہ ترین خبریں