10:15 am
میرے پارلیمنٹ میں جانے یا نہ جانے سے کوئی فرق نہیں پڑے گا

میرے پارلیمنٹ میں جانے یا نہ جانے سے کوئی فرق نہیں پڑے گا

10:15 am

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا پروڈکشن آرڈر پر پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں آنے سے انکار کر دیا ہے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ شاہد خاقان عباسی نے پارلیمنٹ میں آنے سے انکار کر دیا ہے۔ان کا کہنا ہے کہ میرے پارلیمنٹ میں جانے یا نہ جانے سے کوئی فرق نہیں پڑے گا۔نیب حوالات میں ہی ٹھیک ہوں۔شاہد خاقان عباسی نے پروڈکشن آرڈر ملنے کے باوجود بھی پارلیمنٹ اجلاس میں جانےسے انکار کیا ہے۔
نیب حکام نے شاہد خاقان عباسی سے کہا کہ پارلیمنٹ کے اجلاس میں شرکت کے لیے آپکے پروڈکشن آرڈر آئے ہیں۔جس پر انہوں نے کہا کہ میں نیب حوالات میں ہی ٹھیک ہوں۔واضح رہے کہ صدر مملکت عارف علوی نے پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس (آج) منگل کو طلب کیا ہے۔صدر مملکت عارف علوی نے مقبوضہ کشمیر کی کشیدہ صورتحال کے باعث پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس طلب کیا تھا، پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس منگل کی صبح 11 بجےپارلیمنٹ ہاؤس میں شروع ہوا۔جب کہ مشترکہ اجلاس میں مقبوضہ کشمیر اور لائن آف کنٹرول کی صورتحال پرغور کیا جائے گا۔واضح رہے کہ مودی سرکار نے پیر کی صبح صدارتی فرمان جاری کرتے ہوئے بھارتی آئین میں مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت سے متعلق آرٹیکل 370 اور 35 اے کوختم کردیا جس کے نتیجے میں مقبوضہ کشمیر اب ریاست نہیں بلکہ وفاقی علاقہ کہلائے گی جس کی قانون ساز اسمبلی ہوگی۔واضح رہے گذشتہ روز سابق صدر آصف علی زرداری ، لیگی رہنما خواجہ سعد رفیق ، شاہد خاقان عباسی کے پروڈکشن آرڈر جاری کر دیئے گئے ۔ پیر کوسپیکر اسد قیصر کی ہدایت پر قومی اسمبلی سیکریٹریٹ نے پروڈکشن آرڈر جاری کئے ۔ دوسری جانب خواجہ سعد رفیق کے پروڈکشن آرڈرز بھی جاری کردیئے گئے،سپیکر قومی اسمبلیاسد قیصر نے سعد رفیق اور شاہد خاقان عباسی کے بھی پروڈیکشن آرڈر جاری کئے،رانا ثنا ء اللہ کے پروڈکشن آرڈر کے لئے وزارت قانون سے رائے طلب کی گئی ہے، ،پروڈکشن آرڈر قومی اسمبلی کے رواں اجلاس کے لیے جاری کیے گئے۔پروڈکشن آرڈر کی کاپی چیئرمین نیب اور ڈی جی نیب کو بھی بھجوا دی گئی ہیں۔

تازہ ترین خبریں