04:18 pm
بھارت نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو تبدیل کر دیا ہے،خر م دستگیر

بھارت نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو تبدیل کر دیا ہے،خر م دستگیر

04:18 pm

اسلام آباد(آئی این پی)مسلم لیگ ن کے رہنمائوں رانا تنویر حسین اور انجینئر خرم دستگیر نے کہا ہے کہ حکومت کا رویہ غیر سنجیدہ ہے،آج کے سنجیدہ دن بھی حکومت نے قومی اسمبلی سے فرار بہتر سمجھا ،بھارت نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو تبدیل کر دیا ہے،امریکی صدر کی ثالثی کی پیشکش پر بڑے شادیانے بجائے جارہے ہیں، اب کس چیز پرثالثی ہو گی، یہ بڑے اہم سوالات ہیں
وزیر اعظم پارلیمنٹ آکر قوم کو خود بتائیں ، کشمیر کے معاملے پر ہم سب متحد ہیں ، مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہیئے۔ پیر کو پارلیمنٹ ہائوس کے باہر مسلم لیگ ن کے رہنمائوں رانا تنویر حسین اور انجینئر خرم دستگیر نے میڈیا سے گفتگو کی ۔رانا تنویر حسین نے کہا کہ بھارت نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو تبدیل کر دیا ہے، وزیراعظم کے امریکہ کے دورے فورا بعد یہ سارا کام ہوا ہے ،آج قومی اسمبلی کا اجلاس تھا توقع تھی کہ اس معاملے پر سنجیدگی سے بحث کی جائے گی اور قرارداد منظور کی جائے گی، ،اسمبلی میں اپوزیشن کی حاضری بہت زیادہ تھی لیکن نہ تو وزیراعظم موجود تھے اور نہ ہی وزیر خارجہ موجود تھے، 2 گھنٹے بعد حکم نامہ آیا کہ کہ کل مشترکہ اجلاس ہوگا اس لیئے اجلاس کی کاروائی ملتوی کر رہے ہیں ،رانا تنویر حسین نے کہا کہ حکومت کا رویہ غیر سنجیدہ ہے ،بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں کرفیو نافذ کیا ہوا ہے ، وہاں کے رہنمائوں کو نظر بند کیا ہوا ہے ، سیاحوں کو وہاسے نکالا گیا ہے ، اس پر ہم نے اسمبلی میں بات کرنی تھی، افسوس کا مقام ہے کہ اعلی ترین ادارے میں آج بات کرنے کی اجازت نہیں دی گئی اور اجلاس ملتوی کر دیا گیا اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے رہنما انجینیئر خرم دستگیر نے کہا کہ آج اسمبلی میں اپوزیشن اس عزم کے ساتھ آئی تھی کہ کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کریں گے لیکن جب ہم ایوان میں پہنچے تو دکھ کی بات ہے کہ آج کے سنجیدہ دن بھی حکومت نے قومی اسمبلی سے فرار بہتر سمجھا، خرم دستگیر نے کہا کہ کشمیر کے معاملے پر ہم سب متحد ہیں ، مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہیئے ، ہمیں توقع ہے کہ آج اجلاس میں وزیراعظم خود آئیں گے ،امریکی صدر کی ثالثی کی پیشکش پر بڑے شادیانے بجائے جارہے ہیں ، اب کس چیز پرثالثی ہو گی، یہ بڑے اہم سوالات ہیں وزیر اعظم آکر قوم کو خود بتائیں ، خارجہ پالیسی کے بارے میں بڑے سوالات ہیں ، وزیراعظم کرکٹ میچوں کی کامیابی پر ٹویٹ کرتے ہیں لیکن اس معاملے پر ان کا کوئی ٹویٹ نہیں آیا ۔

تازہ ترین خبریں