07:15 am
کسی ملک نے کشمیر کے معاملے پر ہماری حمایت نہیں کی سوائے تُرکی کے

کسی ملک نے کشمیر کے معاملے پر ہماری حمایت نہیں کی سوائے تُرکی کے

07:15 am

اسلام آباد  : موجودہ حالات میں جہاں مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کشیدہ ہے اور پاکستان اس حوالے سے اقدامات کرنے پر غور کر رہا ہے ایسے میں سوشل میڈیا سائٹس پر کچھ لوگ حکومت کے خلاف بلا جواز پراپیگنڈہ کرنے میں مصروف ہیں۔ نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے سینئیر صحافی نجم سیٹھی نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے کی جانے والی تقریر کمزور تھی۔
 
اُس میں کوئی خاص جان نہیں تھی۔ لیکن اُس کی وجہ یہ ہے کہ مجبوری ہے۔ آپ کی معیشت بیٹھی ہوئی ہے اور آپ کے پاس اتنی گنجائش نہیں ہے کہ آپ کوئی اقدامات کر سکیں۔ کیونکہ دنیا آپ پر بھروسہ نہیں کرتی ، ایف اے ٹی ایف آپ کے گلے پڑا ہوا ہے۔ آئی ایم ایف آپ کے گلے پڑی ہوئی ہے امریکہ بھی آپ کے گلے پڑا ہوا ہے دوسری جانب بھارت بھی آپ کی کمزوری دیکھ کر اس کا فائدہ اُٹھا رہا ہے جبکہ آپ کے اپنے گھر میں اتحاد نہیں ہے۔آپ سب لوگ مل کر گھر میں لڑائی جھگڑے کر رہے ہیں۔ اس صورتحال میں جب گھر کے اندر اتحاد نہ ہو تو باہر کی دنیا ناجائز فائدہ اُٹھاتی ہے جو اس وقت ہو رہا ہے۔ نجم سیٹھی نے کہا کہ یہ ایک اہم بات ہے کہ خان صاحب نے کہا کہ میں نے تُرکی اور ملائشیا فون کیا اور اُن سے کہا ہے کہ آپ ہماری حمایت کریں۔ خان صاحب کو ملائیشیا سے تو کوئی خاص لفٹ نہیں ہوئی، وہاں سے اُنہیں کہا گیا کہ ٹھیک ہے سوچتے ہیں،کہ کیا جائے۔تُرکی ہمیشہ ہی پاکستان کو سپورٹ کرتا رہا ہے لیکن تُرکی کے ساتھ رشتہ تو نواز شریف نے قائم کیا تھا۔ اردگان اور نواز شریف کے کافی مضبوط تعلقات ہیں، اس حوالے سے بھی جو کریڈٹ ہے وہ وزیراعظم عمران خان کو نہیں بلکہ نوازشریف کو جاتا ہے۔ امریکہ کے اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ نے کہا ہے کہ ہم اس معاملے کا بغور جائزہ لے رہے ہیں اور ظاہر ہے کہ ہم چاہیں گے کہ لڑائی جھگڑا نہ ہو ۔ انہوں نے نہ تو پاکستان کے مؤقف کی حمایت نہیں کی اور نہ ہی انہوں نے بھارت کے اقدام کی مذمت کی۔ سوشل میڈیا پر نجم سیٹھی سمیت اس وقت اُن تمام افراد کو تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے جو ان نازک حالات میں بھی موجودہ حکومت کو تنقید کا نشانہ بنا کر ان کے خلاف پراپیگنڈہ کر رہے ہیں۔

تازہ ترین خبریں