09:25 am
اسلام آباد میں پاکستان مخالف متنازعہ بینرز میں شہر کے ڈپلو میٹک ایریا کی ایک اہم شخصیت کا ہاتھ ہونے کا انکشاف

اسلام آباد میں پاکستان مخالف متنازعہ بینرز میں شہر کے ڈپلو میٹک ایریا کی ایک اہم شخصیت کا ہاتھ ہونے کا انکشاف

09:25 am

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)اسلام آباد میں گذشتہ روز آویزاں کیے جانے والے پاکستان مخالف اور متنازعہ بینرز کے معاملے میں ملوث افراد کا سُراغ لگا لیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق ذرائع کا کہنا ہے کہ وفاقی دارالحکومت میں آویزاں کیے جانے والے بینرز کے معاملے پر پولیس نے شہر بھر کے تمام پرنٹنگ پریس سے تحقیقات کا آغاز کیا اور دو افراد کو گرفتار کر لیا۔ گرفتار کیے جانے والے افراد میں نعیم پرنٹنگ پریس کا مالک نعیم اور اس کا ایک ساتھی شامل ہے ۔
ملزمان کے مطابق ان بینرز کا آرڈر گوجرانوالہ کے رہائشی ثاقب نامی شخص نے دیا تھا جو خود بھی پرنٹنگ کا کام کرتا ہے ۔ ذرائع کا دعویٰ ہے ان بینرز کو تیار کروانے اور آویزاں کرنے میں اسلام آباد کے ڈپلو میٹک ایریا کی ایک اہم شخصیت کا ہاتھ بھی ہے ۔ اسلام آباد پولیس گوجرانوالہ کے رہائشی ثاقب نامی شخص کی گرفتاری کے لیے رات گئے ہی گوجرانوالہ روانہ ہو گئی تھی۔ ذرائع کے مطابق چونکہ بینرز تین تھانوں کی حدود میں آویزاں کئے گئے اسی لیے تینوں پولیس اسٹیشنز میں اس حوالے سے الگ الگ مقدمات درج کیے جائیں گے۔ دوسری جانب وفاقی پولیس نے سوشل میڈیا اور میڈیا کے ذریعے اطلاع موصول ہونے پر شہر میں لگائے جانے والے پاکستان مخالف بینرز کو اُتار تو لیا لیکن دوسری جانب چیف کمشنر اسلام آباد نے بھی پولیس کو اس حوالے سے تحقیقات کرنے کا حکم بھی دے دیا ہے جبکہ ڈی ایم اے انتظامیہ کے خلاف بھی انکوائری کی ہدایات کی گئی ہیں جس پر ڈی سی اسلام آباد کی جانب سے ڈائریکٹر ڈی ایم اے سے 24 گھنٹوں میں وضاحت طلب کرتے ہوئے دریافت کیا گیا کہ وفاقی دارالحکومت میں کئی گھنٹوں تک آویزاں رہنے والے ان غیرقانونی بینرز کو فوری طور پر کیوں نہیں اُتارا گیا؟ یاد رہے کہ گذشتہ روز دن کی روشنی میں وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی شاہراہوں پر’’ اکھنڈ بھارت رئیل ٹیرر ‘‘کے لوگو پر مبنی بینرز آویزاں کئے گئے تھے۔ بینرز آویزاں ہونے پر پاکستانی عوام نے شہر کی انتظامیہ کو سخت تنقید کا نشانہ بھی بنایا تھا۔