03:40 pm
کشمیر کے معاملے پر جنگ ہمارے مقدر میں لکھ دی گئی ہے، بلوچ قوم کشمیریوں کی جنگ لڑنے کیلئے تیار ہے،

کشمیر کے معاملے پر جنگ ہمارے مقدر میں لکھ دی گئی ہے، بلوچ قوم کشمیریوں کی جنگ لڑنے کیلئے تیار ہے،

03:40 pm

کوئٹہ (نیوزڈیسک) شہید سراج رئیسانی کے صاحبزادے جمال خان رئیسانی نے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ پوری قوم جانتی ہے کہ کشمیر کا مسئلہ مذاکرات سے حل نہیں ہو سکتا۔ کشمیر کے معاملے پر جنگ ہمارے مقدر میں لکھ دی گئی ہے اور اس حقیقت کو کوئی جھٹلا نہیں سکتا۔ ہمیں اب جنگ کے لیے ہر وقت تیار رہنا چاہئیے
اور بلوچ قوم کشمیریوں کے لیے جنگ لڑنے کے لیے روزِ اول سے تیار ہے۔جمال خان رئیسانی نے اپنے ٹویٹر پیغام میں والد شہید سراج رئیسانی کی ویڈیو شئیر کی اور کہا کہ بابا جان شہید سراج رئیسانی اکثر مجھے یہ کہا کرتے تھے کہ "اللہ نے ہم پر بہت سی ذمہ داریاں عائد کر دی ہیں، دینِ اسلام کا تحفظ، پاکستان کا تحفظ، پاک فوج کا ساتھ دینا اور اپنے صوبے کو دشمنوں کی بری نظر سے بچانا، ہمیں اپنا مقصد پورا کرنا ہے چاہے اس کے لیے اپنی جان ہی کیوں نہ دینی پڑے"۔جمال خان رئیسانی کا کہنا تھا کہ جب بابا جان شہید سراج رئیسانی شہید ہوئے تو میں نے اُن کی قبر پر کھڑے ہو کر اُن سے عہد کیا تھا کہ "میں مرتے دم تک آپ کا مشن جاری رکھوں گا" اور اب اُس مشن میں پاکستان کا بچہ بچہ میرا ساتھی ہے۔ آپ سب میرے بازو ہیں۔ پاکستان کی سالمیت ہماری اولین ترجیح ہے چاہے نصیب میں فتح ہو یا شہادت۔جمال خان نے مزید کہا کہ جو نام نہاد لوگ بلوچ ہونے کا دعویٰ کرتے ہیں اور باہر بیٹھ کر اپنے ملک سے غداری کرتے ہیں وہ میرے والد شہید سراج رئیسانی کے جوتے کی خاک کے برابر بھی نہیں ہیں۔ میرے والد نے اپنے بڑے بیٹے کو کھویا اور خود وطن کے لیے جان قربان کی۔ بلوچ کٹ مر تو سکتا ہے لیکن اپنی دھرتی سے کبھی غداری نہیں کرتا۔

تازہ ترین خبریں