01:05 am
اپنی پوری زندگی پاکستانیوں پر قربان کردینے والی ڈاکٹر رتھ فائو کو بچھڑے 2برس بیت گئے

اپنی پوری زندگی پاکستانیوں پر قربان کردینے والی ڈاکٹر رتھ فائو کو بچھڑے 2برس بیت گئے

01:05 am

کراچی(نیوز ڈیسک)پاکستان میں جذام کے مریضوں کی مسیحا ڈاکٹر رتھ فاؤ کی دوسری برسی آج 10 اگست کو عقیدت و احترام کے ساتھ منائی جارہی ہے۔ڈاکٹر رتھ فاؤ 9 ستمبر 1929 کو جرمنی میں پیدا ہوئیں اور 8 مارچ 1960 کو پاکستان آئیں۔ اس کے بعد اپنی جوانی سمیت زندگی کے 57 سال پاکستان میں انسانیت کی خدمت کے لیے وقف کردیے اور مرتے دم تک خدمت کا سلسلہ جاری رکھا۔انہوں نے شادی کرنے کے بجائے
پاکستان میں جذام کے مریضوں کے علاج کو ترجیح دی اور پاکستان میں جذام کے مرض کے خاتمے کو زندگی کا مشن بنایا۔ اس مقصد کیلئے انہوں نے 1963 میں ریگل چوک کے قریب میری ایڈیلیڈ لیپروسی سینٹر کی بنیاد رکھی جہاں مریضوں کا مفت علاج آج بھی جاری ہے۔ انہوں نے نہ صرف کراچی بلکہ پورے پاکستان میں سینٹرز کھولے۔ڈاکٹر رتھ فاؤکی کوششوں سے ہی جنوبی ایشیائی ممالک میں پاکستان نے سب سے پہلے جذام کے مرض پر قابو پایا۔ ان کے قائم کردہ 157 سینٹرز میں آج بھی جذام، تپ دق، آنکھوں کی بیماریوں میں مبتلا مریضوں کا علاج ہورہا ہےڈاکٹر رتھ فاؤ کی خدمات کو پاکستانی قوم نے بھی کبھی فراموش نہیں کیا۔ ان کے انتقال کے بعد سرکاری اعزاز کے ساتھ تدفین کی گئی۔ حکومت پاکستان اور جرمنی سمیت متعدد عالمی اداروں نے ڈاکٹر رتھ فاؤ کو ایوارڈ سے نوازا جبکہ کراچی کا سول اسپتال ڈاکٹر رتھ فاؤ کے نام منسوب کردیا گیا۔

تازہ ترین خبریں