11:04 am
مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے اب صرف دو آپشنز ہی بچے ہیں،تجزیہ کار ظفر ہلالی

مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے اب صرف دو آپشنز ہی بچے ہیں،تجزیہ کار ظفر ہلالی

11:04 am

اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) سینئیرصحافی و تجزیہ کار ظفر ہلالی نے مسئلہ کشمیر کے آخری دو حل بتا دئے ۔ تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام سے بات کرتے ہوئے سینئیر صحافی و تجزیہ کار ظفر ہلالی کا کہنا تھا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا اجلاس ہونے جا رہا ہے۔ ہم کیا سمجھتے ہیں کہ کیا سلامتی کونسل کے اراکین بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو اس بات پر مجبور کریں گے کہ وہ مقبوضہ کشمیر کے حولاے سے کیا جانے والا فیصلہ واپس لیں؟ اس کا تو سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔مودی نے جو فیصلہ کر لیا ہے وہ اُس سے واپس نہیں جا سکتا۔
وہ اس سے پیچھے نہیں جا سکا۔ اب سوال یہ ہے کہ مسئلہ کشمیر اب کیسے حل ہو گا ؟ یہ معاملہ میرے خیال میں، میں سمجھتا ہوں کہ یا تو اس مسئلہ کشمیر پر کوئی ایسے بیانات لگائے جائیں گ جس پر مستقبل میں دوبارہ بحث کی جائے گی۔یا وہ مودی کو یہ کہیں گے کہ مقبوضہ کشمیر میں جو کچھ ہو رہا ہے اس کو بند کیا جائے ، اس کے لیے میرا نہیں خیال کہ وہ انسانی حقوق کی خلاف ورزی کا لفظ بھی استعمال کریں گے۔میں نہیں سمجھتا کہ وہ مودی کو مجبور کریں گے کہ یہ فیصلہ واپس لے ۔ اس لیے کہ یہ مودی کا قومی مفاد ہے۔ بہتر یہی ہے کہ ہم سمجھیں کہ یہ معاملہ اب سفارتکاری سے حل نہیں ہو سکتا۔ میں سمجھتا ہوں کہ ہمارے پاس دو آپشنز ہیں۔ ہم نے تو کچھ کرنا ہی ہے۔ یا تو ایک پراکسی وار ہو گا یا پھر جنگ ہو گی۔ دونوں میں سے ایک کام ضرور ہو گا۔ کیونکہ مودی کے اس ایکشن سے پیدا ہونے والی صورتحال اور امن ایک ساتھ ممکن نہیں ہو سکتا۔