02:43 pm
کشمیر معاملے پر سیکیورٹی کونسل کے اجلاس میں کونسا ملک پاکستان کو بڑا جھٹکا دے گا ؟ پاکستانی جان کر یقین نہیں کریں گے کیونکہ ۔۔!

کشمیر معاملے پر سیکیورٹی کونسل کے اجلاس میں کونسا ملک پاکستان کو بڑا جھٹکا دے گا ؟ پاکستانی جان کر یقین نہیں کریں گے کیونکہ ۔۔!

02:43 pm

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) معروف سینیئر تجزیہ کار صابر شاکر نے اپنے ایک تجزیہ میں کہا ہے کہ اس بار کے مظاہروں میں کشمیریوں کے ساتھ ساتھ سِکھ برادری بھی شریک ہوئی۔ کشمیر کا معاملہ پہلے سائیڈ لائن تھا مگر اب یہ مسئلہ پُوری دُنیا میں زیر بحث ہو رہا ہے۔ ہمارے تین جوان شہید ہوئے جبکہ جوابی حملے میں بھارت کے پانچ فوجی مارے گئے۔ اچانک لائن آف کنٹرول پر جو کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے
، اس کی وجہ یہ ہے کہ پاکستان کو سفارتی سطح پر کامیابی ہوئی ہے۔ کیونکہ پاکستان نے یہ معاملہ سیکیورٹی کونسل اور انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس میں لے جانے کا اعلان کیا تھا۔ اس وقت میدان میں پانچ بڑے ملک ہیں۔ چین اس معاملے پر کھُل کر پاکستان کے ساتھ کھڑا ہے۔ اور بھارت کے اس غیر قانونی اقدام سے پاکستان اور چین دونوں کے برابر کے حقوق اور مفادات متاثر ہوئے ہیں۔ سو اس معاملے پر دونوں ممالک ایک ساتھ ہیں۔ رُوس سے جو بات ہوئی ہے، تو رُوسی وزیر خارجہ نے پاکستان کو یہ یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ سلامتی کونسل میں پاکستانی کی مخالفت نہیں کرے گا۔ اوراگر بات کریں برطانیہ کی، تو 45 برطانوی ارکانِ پارلیمنٹ پہلے ہی اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کو خط لکھ چکے ہیں، اور کشمیر کے معاملے میں بھارتی اقدام کو ناجائز قرار دے چکے ہیں۔ اور سیکرٹری جنرل سے اس معاملے میں مداخلت کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ سو برطانیہ کا لگتا ہے کہ وہ اس معاملے کو براہِ راست ویٹو نہیں کرے گا۔وہ اس معاملے میں کوئی ثالثی کا کردار ادا کرنے کی کوشش کر سکتا ہے۔ یورپی یونین کی پارلیمنٹ کے ممبران بھی کشمیر کے بارے میں آواز اُٹھا چکے ہیں۔ امریکا افغانستان میں اُلجھا ہوا ہے۔ افغانستان کی وجہ سے اس بات کے امکانات موجود ہیں کہ امریکا کھُل کے پاکستان کی مخالفت شاید نہ کرے۔ لیکن یہ بات بھی حقیقت ہے کہ سلامتی کونسل کے پانچ مستقل ممبران کے بھارت کے ساتھ معاشی مفادات بھی جُڑے ہوئے ہیں۔ اب پانچواں مستقبل ممبر ملک بچتا ہے ، فرانس۔ فرانس کے ساتھ بھارت نے بہت بڑا دفاعی سودا بھی کر رکھا ہے۔ سو اس بات کا بہت زیادہ امکان ہے کہ اس بار صدر ٹرمپ اور برطانیہ اپنا ٹرمپ کارڈ فرانس کے ذریعے کھیل سکتے ہیں اور فرانس کے ذریعے پاکستان کی قرارداد کو ویٹو کروا سکتے ہیں۔ اس کے علاوہ بھی بہت سے ممالک ہیں جن کے بھارت کے ساتھ تجارتی مفادات وابستہ ہیں، جس کی وجہ سے وہ بھارت کے خلاف کھُل کر سامنے نہیں آرہے۔