06:21 am
وزیراعظم عمران خان اور جنرل باجوہ کے تعلقات بہت اچھے ہیں، عارف نظامی

وزیراعظم عمران خان اور جنرل باجوہ کے تعلقات بہت اچھے ہیں، عارف نظامی

06:21 am

اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) معروف صحافی عارف نظامی کا آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں تین سال کی توسیع پر تجزیہ پیش کرتے ہوئے کہنا تھا کہ موجودہ حکومت اور پاک فوج کے درمیان ایسا تال میل ہے کہ وزیراعظم عمران خان جنرل باجوہ کے ساتھ ذاتی طور پر اور پروفیشنلی بی کمفرٹیبل فیل کرتے ہیں۔اور ویسے بھی ان کے تعلقات بہت اچھے ہیں۔ماضی میں ایسا نہیں ہوتا تھا۔ماضی میں سیاسی اور فوجی قیادت یا ایک پیج پر نہیں رہی۔اور یہ پہلا موقع ہے کہ کسی آرمی چیف نے خود ایکسٹینشن نہیں مانگی بلکہ ان کو یہ ایکسٹینشن دی گئی ہے۔
سابق ادوار میں ایکسٹینشن اس طرح سے دی گئی کہ وہ حکومت پر قبضہ کر لیتے تھے اور خود ایکسٹینشن لے لیتے تھے۔ جنرل کیانی نے اس وقت کی حکومت سے ایکسٹینشن زبردستی لی تھی۔۔لیکن یہاں ایکسٹینشن سیاسی حکومت نے انہیں خود دی ہے۔ایک اور میڈیا رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہمعروف صحافی عارف حمید بھٹی نے دعویٰ کیا ہے کہ آرمی چیف جنرل قمر باجوہ کی اہلیہ نے انہیں مدت ملازمت میں توسیع کا فیصلہ قبول کرنے کیلئے راضی کیا۔ عارف حمید بھٹی کا کہنا ہے کہ آرمی چیف جنرل قمر باجوہ کو 3 ماہ قبل مدت ملازمت میں توسیع لینے کی پیش کش کی گئی تھی۔تاہم آرمی چیف جنرل قمر باجوہ نے حکومت کی پیش کش قبول کرنے سے انکار کر دیا تھا۔ آرمی چیف کا موقف تھا کہ فوج ایک پروفیشنل ادارہ ہے، اس کا نظام قوائد کے مطابق ہی چلنا چاہیئے۔ تاہم پھر 15 روز قبل ان کی اہلیہ نے انہیں اپنا فیصلہ تبدیل کرنے کیلئے راضی کیا۔ آرمی چیف کی اہلیہ نے انہیں ملک کے موجودہ معاشی اور کشدیدہ سیکورٹی حالات کے باعث اس بات کیلئے راضی کیا کہ وہ حکومت کی جانب سے مزید 3 سال کیلئے آرمی چیف رہنے کی پیش کش قبول کر لیں گے۔ یہ فیصلہ اس لیے لیا گیا تاکہ ملک میں استحکام پیدا ہو۔ خیال رہے کہ آج جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدتملازمت میں تین سال کی توسیع کر دی گئی۔ جنرل قمر جاوید باجوہ مزید تین سال کے لیے آرمی چیف کے عہدے پر مقرر رہیں گے۔

تازہ ترین خبریں