04:03 pm
41سالہ سروس کے بعد ہر بندے کا دل کرتا ہے کہ وہ نارمل لائف گزارے، آرمی چیف توسیع نہیں چاہتے تھے

41سالہ سروس کے بعد ہر بندے کا دل کرتا ہے کہ وہ نارمل لائف گزارے، آرمی چیف توسیع نہیں چاہتے تھے

04:03 pm

راولپنڈی (نیوز ڈیسک)ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے آج پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔ پریس کانفرنس کے اختتام پر ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور سے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع سے متعلق سوال کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ مدت ملازمت میں توسیع نہیں چاہتے تھے۔ 41 سالہ سروس کے بعد ہر بندے کا دل کرتا ہے کہ وہ نارمل لائف میں جائے اور آرام کرے۔
یہاں تک کہ ہمیں بھی اُن سے بات کرنا پڑی۔ آپ دیکھیں کہ چین کے صدرنے پہلی مرتبہ کسی ملک کے آرمی چیف کو بلایا۔ کئی ممالک کے سربراہان ایسے ہیں جن سے آرمی چیف کی پرسنل ریپو ہے۔ اس وقت جو پاکستان کے حالات تھے اور سکیورٹی کی جو صورتحال تھی تو ایسا کرنا وزیراعظم کا استحقاق تھا اور انہوں نے اسے استعمال کیا اور آرمی چیف کو مدت ملازمت میں توسیع دے دی۔اُمید ہے کہ اس سے مزید اچھے نتائج مرتب ہوں گے۔ ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں آپ کو خطے کی صورتحال سے آگاہ کرتا چلوں کہ خطے میں عالمی طاقتوں کے مفادات ہیں۔ بھارت میں ہٹلر کے پیروکار مودی کی حکومت ہے۔ ہماری جغرافیائی پوزیشن کو نظراندازکر کے کسی کے مقاصد پورےنہیں ہوسکتے۔ ہمارے مشرق میں ایک بڑی آبادی والا ملک بھارت ہے۔خطے کے معاشی معاملات میں چین کا کلیدی کردار ہے۔ چین ہمارا آزمودہ دوست ہے، مسائل کے باوجود چین کے بھارت کے ساتھ معاشی تعلقات ہیں۔ جنوب مغرب میں ایران ہے جس سے بھائیوں والے تعلقات ہیں، خطے کے امن کے لیے ایران کی خدمات کو نظرانداز نہیں کیا جاسکتا۔ ہمارا ایک پڑوسی افغانستان ہے جہاں 40 برس سے جنگ ہورہی ہے وہاں ہم نے شہادتوں کے علاوہ کچھ نہیں دیکھا۔اگر ہندوستان پر نظر ڈالیں تو اس وقت وہاں نازی ازم اور آر ایس ایس کی حکومت ہے۔ بھارت میں بائیس کروڑ مسلمان، سکھ ، دلت اور دوسرے لوگ اس مائنڈ سیٹ کے ظلم وستم کا شکار ہیں۔ یہ وہی نظریہ ہے جس نے گاندھی کو قتل کیا، جس نے بابری مسجد کو شہید کیا، جس نے گجرات میں مسلمانوں کو شہید کیا۔ ایسے حالات میں مسلمانوں کو بھارت میں مذہبی اور معاشرتی آزادی نہیں ہے۔بھارتی اقلیتیں مشکلات کا شکار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت 27 فروری کو یاد رکھے۔ میں بھارت کو یہ بتا دوں کہ جنگیں صرف ہتھیاروں سے نہیں لڑی جاتیں۔ جنگیں حب الوطنی کے جذبے اور سپاہی کے جذبے سے بھی لڑی جاتی ہیں۔ اگر بھارت نے پھر سے ایسی کوئی حرکت کی تو ہمارے اسکوارڈن لیڈر حسن اور ونگ کمانڈر نعمان جیسے شاہین تیار بیٹھے ہیں۔

تازہ ترین خبریں