09:11 am
 سائیں قائم علی شاہ کا خود سے متعلق دلچسپ بیان سب کی توجہ کا مرکز بن گیا

سائیں قائم علی شاہ کا خود سے متعلق دلچسپ بیان سب کی توجہ کا مرکز بن گیا

09:11 am

کراچی(نیوز ڈیسک)سابق وزیراعلیٰ سندھ قائم علی شاہ نے دوستوں کی بے وفائی کا گِلہ کر ڈالا اور کہا کہ مجھے وزیراعلی کے عہدے سے کیوں ہٹایا گیا معلوم نہیں، مراد علی شاہ کو وزیراعلٰی بنوانے کے لیے کچھ لوگ کام کررہے تھے۔میرے دور میں اویس مظفر اورفریال تالپور فیصلے نہیں کرتے تھے، مراد علی شاہ کے وقت کے بارے میں نو کمنٹس کہوں گا۔انہوں نے کہا کہ ، دوستوں نے بےوفائی کی ،
دُکھ دینے پر مایوس نہیں ہوا۔ بچپن میں بہت شرارتی تھا۔آج تک کسی کو تعویذ لکھ کر نہیں دیے۔ قائم علی شاہ نے واضح کرتے ہوئے کہا کہ میں آج تک بھنگ سمیت کسی بھی نشے والی چیز کوہاتھ تک نہیں لگایا۔ یاد رہے کہ قائم علی شاہ سندھ کی وزارت اعلیٰ کا منصب 3 بار حاصل کرنے کا اعزاز رکھتے ہیں۔2016ء میں پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے وزیراعلیٰ سید قائم علی شاہ سے ملاقات کی جس کے بعد انہوں نے سید مراد علی شاہ کو سندھ کا نیا وزیراعلیٰ نامزد کردیا تھا۔اس موقع پر چئیرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے سید قائم علی شاہ کی خدمات کو سراہتے ہوئے زبردست خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ ایک انتہائی سینئر اور وفادار پارٹی رہنما کو وزیراعلیٰ کے عہدے سے ہٹا نا ایک انتہائی مشکل فیصلہ تھا لیکن کبھی کبھار پارٹی کو سیاسی اور سٹرٹیجک بنیاد پر پارٹی اور صوبے کے وسیع تر مفاد میں ایسا فیصلہ کرنا پڑتا ہے۔جس کے بعد قائم علی شاہ نے 27 جولائی 2016ء کو گورنر سندھ کو اپنا استعفیٰ پیش کر دیا تھا۔ انہوں نے وزارت اعلیٰ کے عہدے سے ہٹائے جانے کے باوجود بھی پیپلز پارٹی سے کنارہ کشی اختیار نہیں کی۔ سید قائم علی شاہ نے واضح کہا تھا کہ میں بھٹو خاندان کے ساتھ تین نسلوں سے ہوں اور مرتے دم تک رہوں گا۔

تازہ ترین خبریں