02:52 pm
اب کوئی چیز درپردہ نہیں،سب پردے پر ہو رہا ہے، اعجاز شاہ

اب کوئی چیز درپردہ نہیں،سب پردے پر ہو رہا ہے، اعجاز شاہ

02:52 pm

کوئٹہ: وفاقی وزیرداخلہ اعجاز شاہ نے کہا ہے کہ اب کوئی چیزدرپردہ نہیں، سب پردے پر ہو رہا ہے، انہوں نے ایک سوال ”پی ٹی آئی کی حکومت میں درپردہ اسٹیبلشمنٹ کا بڑا عمل دخل ہے، آپ کو نہیں لگتا کہ جمہوریت خطرے میں ہے؟“ کے جواب میں کہا کہ کونسی اسٹیبلشمنٹ ؟ میں اور میرے ساتھ سارے لوگ اسٹیبلشمنٹ کے ہیں، میرا نہیں خیال کہ کوئی درپردہ ایسی قوم ہے جس سے ہمارے تعلقات ہیں؟ کسی زمانے میں درپردہ چیزیں ہوتی تھیں، اب سب کچھ پردے کے اوپر ہے۔
 
انہوں نے آج یہاں کوئٹہ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر میں 40 روز سے زائد ہوگئے کرفیو لگا ہوا ہے، روٹی ، ادویات، اور پانی نہیں مل رہا۔میرا خیال ہے کہ موجودہ صورتحال میں فضل الرحمان دھرنا نہیں دیں گے، ملکی مفادات کیلئے سب کو کردار ادا کرنا ہوگا، مسئلہ کشمیر پر یک زبان ہونا وقت کی ضرورت ہے۔مولا نا فضل الرحمان 10سال تک کشمیر کمیٹی کے چیئرمین رہے۔ہمیں چاہیے کہ لوگوں کو آگاہی دیں کہ بھارت یہ کام کرتا ہے اور یہ کام کرے گا۔اعجاز شاہ نے ایک سوال پر کہ سید خورشید شاہ کو نیب نے گرفتار کرلیا ہے، کیا کہیں گے؟ “ کے جواب میں کہا کہ توکیا ہوگیا؟ کچھ بھی نہیں ہونا،بڑے بادشاہ لوگ ہیں۔نیب والوں نے پکڑا ہے حکومت کے ساتھ کیا ڈیل ہوگی؟انہوں نے ایک اور سوال پر کہا کہ بھئی دیکھیں اگر آپ غلط کام کرتے پکڑے جائیں اور آپ کو گرفتار کرلیا جائے تو کیا آپ ٹف ٹائم دیں گے؟اگر آپ کی اولاد سکول نہیں جاتی اور اس کو ٹف ٹائم دیتے ہو، توکیا آپ چاہیں گے کہ وہ سکول نہ جائے؟یہ کوئی بات نہیں ہے۔معمولات زندگی چلتا رہتا ہے۔چیلنجزکے باوجود صورتحال پہلے سے بہتر ہے۔انہوں نے سیف سٹی پراجیکٹ بننا چاہیے۔صرف کوئٹہ میں ہی نہیں بلکہ بلوچستان کے دوسرے شہروں میں سیف سٹی بنائیں گے، کیونکہ یہ لگژری نہیں بلکہ وقت کی ضرورت بن گئی ہے۔انہوں نے ایک سوال پر کہا کہ کسی اتحادی کے ساتھ کوئی ناراضگی نہیں ہے، ناراضگی تو گھر میں بھی ہوجاتی ہے، آپ اپنی بیوی کو کہتے ہیں آلو گوشت پکاؤ، وہ نہیں پکاتی، وہ ماش کی دال پکا لیتی ہے۔تو ناراضگی ہوگئی ناں؟یہ کوئی ایسی بات نہیں کہ بات طلاق پر چلی جائے۔وزیرداخلہ اعجاز شاہ نے ایک سوال ”پی ٹی آئی کی حکومت میں اسٹیبلشمنٹ کا بڑا عمل دخل ہوگیا ہے،آپ کو نہیں لگتا کہ جمہوریت خطرے میں ہے؟“ کے جواب میں کہا کہ کونسی اسٹیبلشمنٹ ؟میں اور میرے ساتھ سارے لوگ اسٹیبلشمنٹ کے ہیں، میرا نہیں خیال کہ کوئی درپردہ ایسی قوم ہے جس سے ہمارے تعلقات ہیں؟کسی زمانے میں درپردہ چیزیں ہوتی تھیں، اب سب کچھ پردے کے اوپر ہے۔انہوں نے کہا کہ میڈیا کا یہ کام نہیں کہ مکھن لگائے، غلط کام ، اچھے کام دونوں کو اجاگر کریں۔

تازہ ترین خبریں

پاکستان عالمی فورم پر کیسز کیوں لڑ رہا ہے؟ وزیر اعظم کا استفسار

پاکستان عالمی فورم پر کیسز کیوں لڑ رہا ہے؟ وزیر اعظم کا استفسار

جو استفعیٰ نہیں دے گا،میں اس کے گھر کا گھیراؤ کراؤں گی، مریم نواز کی لیگی ارکان کو دھمکی

جو استفعیٰ نہیں دے گا،میں اس کے گھر کا گھیراؤ کراؤں گی، مریم نواز کی لیگی ارکان کو دھمکی

پی ٹی آئی نے جے یو آئی کے خلاف فارن فنڈنگ کیس کر دیا

پی ٹی آئی نے جے یو آئی کے خلاف فارن فنڈنگ کیس کر دیا

چئیرمین نیب نے اپنے ساتھ پیش آئے فراڈ کے واقعے کی تفصیل بتا دی

چئیرمین نیب نے اپنے ساتھ پیش آئے فراڈ کے واقعے کی تفصیل بتا دی

بھارت کا مکروہ چہرہ ایک مرتبہ پھر بے نقاب ۔۔۔۔  یورپین پارلیمنٹ کمیٹی نےای یوڈس انفولیب کےمعاملےکواٹھالیا

بھارت کا مکروہ چہرہ ایک مرتبہ پھر بے نقاب ۔۔۔۔ یورپین پارلیمنٹ کمیٹی نےای یوڈس انفولیب کےمعاملےکواٹھالیا

ایف ائی اے کی شفافیت ۔۔۔۔ دو خواتین افسران گرفتا ر

ایف ائی اے کی شفافیت ۔۔۔۔ دو خواتین افسران گرفتا ر

باکمال لوگ لاجواب سروس۔۔۔ پی آئی اے نے کوئٹہ اور کراچی کے درمیان سفر کرنے والوں کیلئے خوشخبری سنادی

باکمال لوگ لاجواب سروس۔۔۔ پی آئی اے نے کوئٹہ اور کراچی کے درمیان سفر کرنے والوں کیلئے خوشخبری سنادی

پی ٹی آئی کے رکن اسمبلی نے وزیراعلیٰ پنجاب کی شکایت چوہدری پرویز الہیٰ سے کردی۔

پی ٹی آئی کے رکن اسمبلی نے وزیراعلیٰ پنجاب کی شکایت چوہدری پرویز الہیٰ سے کردی۔

نیب قانون میں ترمیم ۔۔۔۔ پاکستان مسلم لیگ ن نے ترمیمی بل واپس لے لیا

نیب قانون میں ترمیم ۔۔۔۔ پاکستان مسلم لیگ ن نے ترمیمی بل واپس لے لیا

وزارت پٹرولیم اپنی بھیانک غلطیاں جھوٹ بول کر چھپانے لگی

وزارت پٹرولیم اپنی بھیانک غلطیاں جھوٹ بول کر چھپانے لگی

مریم نواز کے خوف سے پارلیمان کا اجلاس بھی نہیں چل سکتا ۔نوازاور شہباز شریف کے منصوبوں کو گروی رکھنے پر شرم آنی چاہیے۔ مریم اورنگزیب

مریم نواز کے خوف سے پارلیمان کا اجلاس بھی نہیں چل سکتا ۔نوازاور شہباز شریف کے منصوبوں کو گروی رکھنے پر شرم آنی چاہیے۔ مریم اورنگزیب

سلیکٹڈ وزیراعظم کی کارکردگی زیرو جبکہ کابینہ کی کارکردگی زیرو پلس زیرو ہے۔ شازیہ مری

سلیکٹڈ وزیراعظم کی کارکردگی زیرو جبکہ کابینہ کی کارکردگی زیرو پلس زیرو ہے۔ شازیہ مری

اپوزیشن کو این آر او نہیں دیا گیا تو پی ڈی ایم وجود میں آئی۔ دو ممالک نے جے یو آئی کو بھی فنڈنگ کی ہے ۔  مراد سعید 

اپوزیشن کو این آر او نہیں دیا گیا تو پی ڈی ایم وجود میں آئی۔ دو ممالک نے جے یو آئی کو بھی فنڈنگ کی ہے ۔  مراد سعید 

بختاوربھٹو کی شادی ۔۔۔۔ مولانا فضل الرحمان کو مدعو نہیں کیا گیا

بختاوربھٹو کی شادی ۔۔۔۔ مولانا فضل الرحمان کو مدعو نہیں کیا گیا