09:46 am
 اگر عمران خان بھی اس پر ہاتھ ڈالیں گے تو وزارت عظمیٰ سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے

اگر عمران خان بھی اس پر ہاتھ ڈالیں گے تو وزارت عظمیٰ سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے

09:46 am

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) قصور میں بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی اور پھر ان کا قتل یوں تو افسوسناک حد تک بڑھ چکی ہے تاہم اس واقعے کو شہرت زینب اور اس کے قاتل عمران علی سے ملی ۔ پاکستانی تاریخ میں زینب جیسے کیسز بہت کم ہیں جن میں مجرم کو سزائے موت دی گئی ۔ تاہم اس سزائے موت سے شاید مجرموں کو کوئی عبرت نہیں ملی کیونکہ اب پھر سے وہی گروہ سرگرم ہے اور پاکستان کے کئی شہروں میں جنسی زیادتی کے کیسز سننے اور دیکھنے میں آرہے ہیں ۔
اس حوالے سے نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے سینئیر صحافی و تجزیہ کار ڈاکٹر شاہد مسعود نے کہا کہ زینب قتل کیس کے مجرم عمران کو جب پھانسی کے لیے لے جایا گیا تو اُس نے کہا کہ یہ ہے پھندا اور میں پھانسی لگنے جا رہا ہوں۔ میں صرف ایک بات آپ کو بتا دوں کہ میں پھانسی لگنے جا رہا ہوں اور یہ میرا آخری وقت ہے ، میں صرف آپ کو یہ بتانا چاہتا ہوں کہ میں اکیلا نہیں تھا۔ انہوں نے اپنے پروگرام میں یہاں تک کہا تھا کہ اس کام میں اتنے طاقتور انٹرنیشنل مافیاز ملوث ہیں کہ اگر عمران خان نے اس کے اندر جانے کی کوشش کی تو ان کی اپنی حکومت چلی جائے گی۔انہوں نے اپنے پروگرام میں بتایا کہ جو لوگ بیٹھے ہیں اور اپنے گینگ چلا رہے ہیں۔ گزشتہ روز بھی انہوں نے اپنے پروگرام میں کہا کہ چونیاں کے اسی علاقے میں 15مزید بچے لاپتا ہیں،ان بچوں کی عمریں3سے 4سال ہیں، چار بچوں کی لاشیں ملیں توایف آئی آر درج ہوگئی،لیکن ا ن کی ابھی تک ایف آئی آر بھی درج نہیں ہوئیں۔ انہوں نے کہا کہ ان بچوں کے لواحقین رو رہے ہیں۔ خیال رہے کہ حال ہی میں کم سن بچوں سے زیادتی اور ان کے اغوا کے واقعات میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے جس کی وجہ سے والدین بھی خوف و ہراس کا شکار ہو گئے ہیں اور ان کی ہر ممکن حد تک کوشش ہے کہ بچوں کو گھروں میں محفوظ رکھا جائے اور بلا ضرورت باہر نکلنے نہ دیا جائے۔

تازہ ترین خبریں