06:28 pm
نوازشریف کی رہائی تک دھرنا جاری رہے گا، ڈیل نہ ہونے کی صورت میں حکومت گرانے تک دھرنا دینگے

نوازشریف کی رہائی تک دھرنا جاری رہے گا، ڈیل نہ ہونے کی صورت میں حکومت گرانے تک دھرنا دینگے

06:28 pm

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)جمعیت علماء اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان صدر ن لیگ شہبازشریف سے ملاقات کرنے ان کی رہائشگاہ پہنچے تھے۔انہوں نے کہا کہ ہمارا کسی بھی ادارے کیساتھ تصادم نہیں ہے، ہم ملک میں 15 پرامن ملین مارچ کرچکے ہیں، آزادی مارچ کی تاریخ کا اعلان ایک دو روز میں کریں گے۔ اسی حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے سینئیر صحافی عارف حمید بھٹی نے انکشاف کیا ہے کہ شہباز شریف نے مولانا فضل الرحمان سے مطالبہ کیا ہے کہ اگر ڈیل نہ ہوئی تو آت تب تک دھرنا دو گے جب تک حکومت نہیں گر جاتی۔عارف حمید بھٹی نے مزید کہا کہ مسلم لیگ ن کی ڈیل کے معاملات کافی حد تک طے ہو چکے ہیں
لیکن مولانا فضل الرحمن اور شہباز شریف کی آج ملاقات میں یہ بات طے ہوئی ہے کہ اگر ڈیل ہوئی ٹھیک ہے۔لیکن اگر ڈیل نہ ہوئی تو آپ تب تک دھرنا دو گے جب تک حکومت نہیں گر جاتی۔واضح رہے کہ جمیعت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے اسلام آباد مارچ کا اعلان کر رکھا ہے۔مولانا فضل الرحمان نے اسلام آباد مارچ کے حوالے سے تاریخوں کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ آزادی مارچ 16 سے 31 اکتوبر کے درمیان ہی ہو گا۔ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ سیاسی جماعتیں ہماری تیاریوں پر اعتماد کریں ، آزادی مارچ انہی تواریخ کے درمیان ہوگا۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ مولانا فضل الرحمان نے اسلام آباد مارچ کے لیے اپوزیشن کی دیگر سیاسی جماعتوں کو ساتھ دینے کی دعوت دے رکھی تھی۔جس کے لیے تاحال پاکستان پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن کشمکش کا شکار ہے اور کسی جماعت نے بھی تاحال مولانا فضل الرحمان کا اسلام آباد مارچ میں ساتھ دینے یا نہ دینے کے حوالے سے تاحال کوئی اعلان سامنے نہیں آیا۔کچھ سیاسی تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ مولانا فضل الرحمان بھی ڈیل کی طرف جا سکتے ہیں۔

تازہ ترین خبریں