11:58 am
زمین ہلی ، دھماکہ ہوا اور سناٹا چھا گیا

زمین ہلی ، دھماکہ ہوا اور سناٹا چھا گیا

11:58 am

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) میرپور آزاد کشمیر میں گذشتہ روز آنے والے خوفناک زلزلے کے نتیجے میں ہونے والے نقصان کے باعث 33 سے زائد افراد جاں بحق جبکہ 600 سے زائد افراد زخمی ہوئے۔ زلزلے سے سب سے زیادہ نقصان میر پور آزاد کشمیر میں ہوا۔ اس حوالے سے عینی شاہدین نے زلزلے کے بعد کے خوفناک مناظر بیان کر دئے۔ عینی شاہد کا کہنا تھا کہ چار بجے کے قریب زلزلہ آیا۔زمین ہلی ، دھماکے ہوئے اور ایک دم سناٹا چھا گیا۔ اپر جہلم نہر کی سڑک پر دراڑیں پڑ گئیں اور گاڑیاں پھنس گئیں۔ ہم نے اپنی مدد آپ کے تحت امدادی کام شروع کر دیا۔ عینی شاہدین نے کہا کہ نہر میں شگاف پڑنے کی وجہ سے بھی کئی دیہات زیر آب آ گئے۔
رابطہ پُل ٹوٹنے کی وجہ سے نظام زندگی معطل ہو گیا۔ خیال رہے کہ گذشتہ روز آزادکشمیر اور پنجاب کے اکثر علاقوں میں آنے والے زلزلے سے 33 افراد جاں بحق اور 600 سے زائد افراد زخمی ہوئے تھے۔ سہ پہر 4 بج کر 2 منٹ پر آنے والے زلزلے سے سب سے زیادہ تباہی آزاد کشمیر میں ہوئی۔زلزلہ پیما مرکز کے مطابق زلزلے کی شدت 5.8 ریکارڈ کی گئی اور اس کا مرکز جہلم سے 5 کلو میٹر شمال ، گہرائی زیر زمین 9 کلو میٹر تھی ۔ میرپور آزاد کشمیر میں گذشتہ روز آنے والے زلزلے کے بعد آفٹر شاکس کا سلسلہ جاری ہے۔ آج صبح ساڑھے 9 بجے 3.2 شدت کے آفٹر شاکس محسوس کیے گئے جس سے لوگ خوفزدہ ہو کر گھروں اور دفاتر سے باہر نکل آئے۔حکومت آزاد کشمیر نے میرپور زلزلہ کے باعث آج ضلع میرپور کے تمام سرکاری و پرائیویٹ تعلیمی اداروں میں عام تعطیل کا اعلان کیا ۔آزاد کشمیر کے علاقہ میر پور میں تعلیمی ادارے دو روز کے لیے بند رہیں گے۔ مقامی انتظامیہ کے مطابق تعلیمی اداروں میں چھٹی کا فیصلہ آزاد کشمیر کے مختلف علاقوں میں زلزلے کے بعد آنے والے آفٹر شاکس کے باعث کیا گیا ۔