12:46 pm
کچراپھینکنے والوں کی نشاندہی کرنیوالوں کو کتنے لاکھ روپے انعام دیا جائیگا، حکومت نے بڑااعلان کردیا

کچراپھینکنے والوں کی نشاندہی کرنیوالوں کو کتنے لاکھ روپے انعام دیا جائیگا، حکومت نے بڑااعلان کردیا

12:46 pm

کراچی(نیوز ڈیسک)سندھ حکومت نے شہر میں کچرا پھینکنے اور سیوریج لائنوں میں پتھر اور رضائیاں ڈالنے والوں کی نشاندہی پر ایک لاکھ روپے انعام کا اعلان کردیا ہے۔کراچی میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے وزیر اطلاعات سندھ سعید غنی نے کہا کہ کراچی کے دعویدارہی اسے گندا کررہےہیں، کراچی میں جان بوجھ کرمسائل پیدا کیے جارہے ہیں۔ ایک شخص کو میں نے خود سڑک کے کنارے سے کچرا اٹھا کر بیچ میں ڈالتے ہوئے دیکھا، میں نے کچرا پھینکنے والے شخص کی تصاویربھی لیں۔ مجھے بتایا گیا کہ کل صفائی کی گئی آج پھر اس جگہ پرانا کچرا ڈالا گیا۔وزیرا طلاعات سندھ نے کہا کہ شہر میں صفائی مہم سے بہتری آنا شروع ہوئی ہے
اور اس کے اچھے نتائج آرہے ہیں۔ کچرا یا ملبہ سڑکوں پر پھینکنا جرم ہے ایسا نہ کیاجائے، سڑکوں پرکچرا پھینکنے والوں کےخلاف کارروائی ہوگی۔سعید غنی نے شہریوں سے درخواست کرتے ہوئے کہا کہ سیوریج لائنزمیں پتھر پھینکنے والوں کی ویڈیوبنائیں، کچراپھینکنے والوں کی نشاندہی کرنیوالوں اور گٹرمیں اینٹیں اور رضائیاں ڈالنے والوں کی اطلاع دینے والوں کوایک لاکھ روپے انعام دیاجائے گا۔ حکومت اکیلے کراچی کےمسائل حل نہیں کرسکتی۔ واٹربورڈ کو کام سے روکنے کے لئے مخالفین نے دھرنادیا، گٹرمیں کچرا ڈالنےکی واٹس ایپ نمبر 03000084296 پراطلاع دیں۔پیر کو جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق وزیراعلی سندھ کو روزانہ کی بنیاد پر پیش کردہ رپورٹ میں صوبائی وزیر بلدیات سید ناصر شاہ نے بتایا کہ 22 ستمبر کو مجموعی طور پر 13181 ٹن کچرا اٹھایا گیا جس میں 1134 ورکرز نے حصہ لیا جبکہ پہلے دن 21 ستمبر کو 7152 ٹن کچرا اٹھایا گیا جس میں 1263 ورکرز نے شرکت کی۔ رپورٹ کے مطابق مہم کے افتتاحی دن یعنی 21 ستمبر کو مجموعی طورپر 212 ڈمپرز نے 7152 ٹن کچرا اٹھایا اور اسے 848 ٹرپس کے ذریعے عارضی جی ٹی ایس تک پہنچایا۔صفائی اور کچرا اٹھانے کے کام میں 1263 ورکرز نے حصہ لیا۔ 00:00 / 00:00 Loading Ad 22 ستمبر کو کچرا اٹھانے کا کام مزید منظم طریقے سے کیا گیا اور 1253 ٹرپس کے ذریعے 13181 ٹن کچرا اٹھایا گیا۔ 147 ڈمپرز استعمال کیے گئے جن کے لیی1134 ورکرز نے کام کیا۔ اس طرح مہم کے دو دنوں کے دوران 20306 ٹن کچرا اٹھایا گیا۔ سب سے زیادہ 2500 ٹن کچرا ماڈل کالونی سے اٹھایا گیا جبکہ 2200 ٹن کورنگی، 2000 ٹن شاہ فیصل کالونی،1540 ٹن لانڈھی سے اٹھایاگیا ہے۔ وزیراعلی سندھ نے صوبائی وزیر بلدیات سید ناصر شاہ پر زور دیا کہ وہ مہم کو مزید موثر اور منظم بنائیں۔ کچرا اٹھانے کے کام کی نگرانی کے لیے وزیراعلی سندھ نے 18 رکنی مانیٹرنگ کمیٹی تشکیل اور نوٹیفائی کی ہے۔