05:34 pm
بوڑھے والدین کو ابھی مطلع نہیں کیا ہے، میت گائوں پہنچنے پر بتاؤں گا

بوڑھے والدین کو ابھی مطلع نہیں کیا ہے، میت گائوں پہنچنے پر بتاؤں گا

05:34 pm


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) 5بہنوں سمیت ماں، باپ، بیوی اور ننھی بیٹی کا واحد کفیل دبئی حادثے میں جاں بحق ہو گیا ہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق صبح سویرے دُبئی میں ایک انتہائی ہولناک واقعہ پیش آیا ہے جس کے نتیجے میں 8 افراد زندگی سے محروم ہو گئے ہیں، جبکہ 6افراد زخمی بھی ہوئے ہیں جن میں سے دو افراد کی حالت تشویش ناک بتائی جا رہی ہے۔ دُبئی پولیس کی جانب سے بتایا جا رہا ہے کہ یہ حادثہ شیخ محمد بن زاید روڈ پر شارجہ جانے والی سمت میں مِڈ رف سِٹی سینٹر سے پہلے پیش آیا ۔
جب مسافروں سے بھری ایک منی بس آگے جاتے سٹیشنری ٹرک سے جا ٹکرائی۔ حادثہ اتنا شدید تھا کہ منی بس کا اگلا حصہ بُری طرح سے پچک گیا۔ اور بس کی اگلی سیٹ پر بیٹھا ڈرائیور اسی لمحے جان سے ہاتھ دھو بیٹھا۔ اس منی بس کے ڈرائیور کا تعلق پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور سے تھا۔ صاحب رحمان کی میت کو وطن واپس بھیجنے کے لیے اس کے دوست اور رشتہ دار کاغذی کارروائی مکمل کر رہے ہیں۔ متوفی کے چچا نے میڈیا سےبات کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہوں نے صاحب رحمان کے بوڑھے والدین کو ابھی اس خبر سے مطلع نہیں کیا ہے، انہوں نے روتے ہوئے بتایا کہ وہ میت پشاور پہنچنے پر صاحب کے والدین کو یہ خبر دیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ صاحب اپنے والدین کا اکلوتا بیٹا تھا اور اس کی 5چھوٹی بہنیں ہیں جبکہ اسکے بوڑھے والدین، بیوی اور ننھی بیٹی کی ذمہ داری بھی اسی پر تھی۔ صاحب رحمان اپنی پانچوں بہنوں، بیٹی، والدین اور بیوی کا واحد کفیل تھا اور اب اس کے بعد ان کے گھر میں کوئی کمانے والا نہیں رہا ہے۔ پولیس کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ جائے حادثے پر کی جانے والی ابتدائی تحقیقات سے پتا چلا ہے کہ یہ جان لیوا حادثہ منی بس کے ڈرائیور کی غلطی سے پیش آیا جس نے اپنے سے آگے جاتے سٹیشنری ٹرک سے محفوظ فاصلہ نہیں رکھا ہوا تھا۔