08:00 am
کینیڈین خاتون سے شادی کرنے والے پاکستانی کا عبرتناک انجام

کینیڈین خاتون سے شادی کرنے والے پاکستانی کا عبرتناک انجام

08:00 am

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان اور بھارت وہ دو ممالک ہیں جن کے نوجوانوں کی اکثریت بیرونی ممالک میںسیٹ ہونے کیلئے ان ممالک کی لڑکیوں سے شادی کر کے وہاں پکاہونا ایک آسان راستہ سمجتی ہے یا پھر شادی کے نام پر ان معصوم لڑکیوں سے پیسہ ٹھگ لینا ۔ گو کہ پاکستان میں ایسے نوجوانوں کی تعداد بہت کم ہے تاہم اکا دکا کیسز بھی ملک کا نام بدنام کروانے کیلئے بہت ہوتے ہیں۔ ایسا ہی ایک واقعہ حماد بٹ کا ہے ۔ 2015میں ایک کنیڈین لڑکی نے سیالکوٹ کے حماد بٹ نامی شخص سے شادی کی تھی
جن کی دوستی سوشل میڈیا پر ہوئی تھی۔لیکن اس کے بعد حماد اور عینی میری کی طلاق ہو گئی تھی جس کے بعد عینی میری نے حماد کے خلاف مقدمہ درج کروایا تھا کہ کنیڈین بیوی سے فراڈ پر پاکستانی نوجوان کو چھ سال قید کی سزا سنا دی گئی ہے۔عینی نے موقف اختیار کیا کہ حماد بٹ نے اس ایک لاکھ چالیس ہزار ڈالر لیے اور 15دن بعد طلاق دے دی۔ حماد بٹ نے خاتون سے شادی کرکے ایک لاکھ چالیس ہزار روپے کاروبار کیلئے لئے تھے۔ عینی میری نے رقم غیر ملکی اکاونٹ سے ملزم کے اکاونٹ میں بذریعہ بنک ٹرانسفر کی تھی۔ خاتون کی درخواست پر تھانہ نیکا پورہ پولیس نے 2015 میں فراڈ کا مقدمہ درج کیا تھا۔ ماڈل کورٹ کے فاضل جج نے ملزم کو قصوروار ثابت ہونے پر چھ سال سزا سنا دی ہے۔ خاتون وکیل شکیل بھٹی کا کہنا تھا کہ کینیڈین نژاد خاتون عینی میری کا کیس ماڈل کورٹ میں ایک ہفتہ قبل ٹرائل کے لیے آیا تھا۔ میں اپنے وکلا کی ٹیم کی انتہائی مشکور ہوں جنہوں نے اسکو انصاف دلایا۔ عینی نے کہا ہے کہ فراڈ کرنے والے ملزم کو سزا پر خوشی ہے۔