06:21 am
 دھرنے پر لاٹھی چارج او ر آنسو گیس فائر کروادی جائے

دھرنے پر لاٹھی چارج او ر آنسو گیس فائر کروادی جائے

06:21 am


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) یاد ماضی عذاب ہے یا رب ، چھین لے مجھ سے حافظہ میرا ۔ آج مولانا فضل الرحمان کی ایک تقریر جو انہوںنے غالباً 2ستمبر 2014کو پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں کی تھی کو سن کر اختر انصاری کا یہ عالمی شہرت یافتہ شعر بڑی شدت سے یاد آیا ۔ان دنوں اسلام آباد تحریک انصاف کے دھرنے کا شکار تھا اور چہار سو اس دھرنے کو برداشت کرنے والی حکومت کے صبر و تحمل کے راگ الاپے جا رہے تھے ۔
مولانا بھی ان میں سے ایک تھے جن کی زبان ِ بے مثال سے ن لیگی حکومت کی برداشت کو سراہنے کے ساتھ ساتھ انہیں مشورہ دیا گیا کہ حکومت کو چاہئے کہ وہ طاقت کا استعمال کرتے ہوئے ڈنڈوں ، لاٹھیوں اورآنسو گیس کے ذریعے تحریک انصاف کے دھرنے کو منتشر کرے ۔ انہوںنے کہا کہ طاقت کے استعمال کا یہ مطلب نہیں کہ فوج آئے اور آکر گولیاں برسا دے، یہ کام تو بعد کے ہیں ، پہلے پہل لاٹھی چارج اور آنسو گیس سے کام لیا جائے ۔ وہ اجلاس میں شریک قابل صد احترام ساتھیوں کی اتفاق رائے سے بات کرتے ہوئے کہنے لگے کہ آج کے بعد یہ حکومت کی آئینی و قانونی ذمہ داری ہے کہ وہ ان جتھوں سے اسلام آباد کو پاک کر دیا جائے ۔ انہوںنے مزید کیا کہا ، وڈیو دیکھیں :