02:33 pm
جے ایف 17بلاک تھری کے بانی ائیرمارشل (ر) شاہدلطیف نے کہاکہ جے ایف 17بلاک تھری بلاک ون سے کہیں زیادہ طاقتورہے

جے ایف 17بلاک تھری کے بانی ائیرمارشل (ر) شاہدلطیف نے کہاکہ جے ایف 17بلاک تھری بلاک ون سے کہیں زیادہ طاقتورہے

02:33 pm

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )جے ایف 17بلاک تھری کے بانی ائیرمارشل (ر) شاہدلطیف نے کہاکہ جے ایف 17بلاک تھری بلاک ون سے کہیں زیادہ طاقتورہے اوربہترہے اب جہازوں میں بلاک بلڈنگ کی جاتی ہے جہاز کاایک ائیرفریم بنادیاجاتاہے اور بعداس میں نئے ہتھیاراورنیا اویانکس سسٹم نصب کیاجاتاہے ،جب نئے ہتھیاریاکوئی نئی ٹیکنالوجی آتی ہے توجہاز میں اس کونصب کردیاجاتاہے میں ایف 16کی ٹریننگ ٹیم کاحصہ تھااوران پائلٹوں میں بھی شامل تھاجنہوں نے امریکہ جاکرایف 16کی ٹریننگ حاصل کی
جب ہم ٹریننگ کررہے تھے تواس وقت ایف 16بلاک فائیوتھے جب ہم نے ٹریننگ مکمل کرلی تواس وقت ہم بلاک 15طیارے لیکرآئے ٹیکنالوجی میں اتنے عرصے میں بہت زیادہ ترقی ہوچکی تھی۔پہلے جہاز کے ائیرفریم پرزیادہ توجہ دی جاتی تھی کیونکہ جہاز نے ڈاگ فائٹ کرنی ہوتی تھی لیکن اب توجہازوں میں بی وی آرمیزائل لگے ہوتے ہیں اوردشمن کومعلوم ہی نہیں ہوتااورمیزائل اسکو ہٹ کرتاہے۔جب آپ جہاز میں اویانکس اورہتھیاراپ گریڈ کرتے ہیں توایک اوربلاک بن جاتاہے،ایف 16جب ہم نے آخرمیں خریداتووہ بلاک 52تھااوروہ آج بھی فرنٹ لائن جہازوں کیساتھ کھڑاہے۔اب جے ایف 17بلاک تھری جوہے وہ بلاک ون سے کہیں اوپرچلاگیاجہاز کی بڑائی اس کے اویانکس اورہتھیاروں کی اپ گریڈیشن سے ہے اب آپ کے فضاء سے فضاء میں مارکرنیوالے میزائل بھی بی وہ آرہوگئے ہیںہم نے جوپچھلی مرتبہ بم گرائے ہم اپنے ایریامیں تھے اورہم نے بم بھارتی تنصیبات پر گرائے۔اب آپ کوبم گرانے کیلئے وہاں نہیں جاناپڑتایہ سب آپ کی اویانکس اورہتھیاروں کی صلاحیت کاکمال ہے۔جوں جوں ہتھیاروں اوراویانکس میں بہتری اورترقی آتی جائیگی یہ آپ کے جہاز آپ کوآسمان تک پہنچادیں گے اورجدیدترین جہازوںکے ہم پلہ ہوں گے۔اینکرکے ففتھ جنریشن کے سوال پرانہوں نے کہاکہ آپ جے ایف 17کوففتھ جنریشن جہاز کیساتھ نہ جوڑیں وہ ایک الگ چیز ہے اوریہ ایک الگ چیز ہے۔جے ایف 17کوآپ رفائل ،یوروفائٹرکے ساتھ کمپیئرکرسکتے ہیں جہاں تک ففتھ جنریشن کاتعلق ہے تو وہ جہاز اب تک تین ملکوں نے بنایاہےاوروہ ممال روس ،امریکہ اورچین ہیںپاکستان چوتھاملک ہوگاجویہ بنائے گاترکی بھی اس ریس میں شامل ہے۔ترکی خریدنے جارہاہے جبکہ ہم بنانے جارہے ہیں کتنے مسلمان ممالک ہیںجن کے پاس یہ ٹیکنالوجی ہے میرے خیال میںکوئی بھی نہیں ہے ۔

تازہ ترین خبریں