04:41 pm
حکومت کا جیل میں وی آئی پی قیدیوں سے ملاقات پر فیس لینے کا فیصلہ

حکومت کا جیل میں وی آئی پی قیدیوں سے ملاقات پر فیس لینے کا فیصلہ

04:41 pm

لاہور(نیوز ڈیسک)پنجاب حکومت نے جیلوں میں وی وی آئی پی ملاقاتوں کی فیس رکھنے کا فیصلہ کر لیا جو 2 تا 5 ہزار روپے رکھنے کی تجویز ہے۔بتایا گیا ہے کہ پنجاب کی جیلوں میں 2 سے 3منزلہ ملاقاتی شیڈ بنانے کا بھی فیصلہ کیا گیاہے جن میں بلٹ پروف شیشے اور انٹر کام لگائے جائیں گے۔ ملاقاتی اور قیدی انٹرکام کے ذریعے بات چیت کر سکیں گے۔ملاقاتی اگر قیدی کو کچھ دینا چاہیں تو وہ باقاعدہ چیک ہونے کے بعد اسی وقت دیا جا سکے گا۔خیال رہے کہ اس وقت جیل میں اہم سیاسی رہنما قید ہیں۔سابق وزیراعظم نواز شریف، سابق صدر آصف علی زرداری اور ن لیگ کی رہنما مریم نواز جیل میں قید ہیں۔نواز شریف اور مریم نواز سے ملاقات کا دن جمعرات مقرر کیا گیا ہے۔
ہر جمعرات کو نواز شریف سے اہلخانہ سمیت پارٹی رہنما ملاقات کرتے ہیں۔ گذشتہ جمعرات کوٹ لکھپت جیل میں قید سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز سے ان کے خونی رشتہ داروں نے ملاقات کی اور دوپہر کا کھانا سب نے ملکر کھایا۔ ملاقات کرنیوالوں میں نواز شریف کی والدہ اور مریم نواز کی دادی شمیم بیگم، اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی شہباز شریف، سابق وزیراعظم کے داماد اور مریم کے شوہر کیپٹن (ر) صفدر شامل تھے۔واضح رہے کہ کوٹ لکھپت جیل میں قید نواز شریف اور مریم نواز سے ملاقات کا جمعرات مقرر کیا گیا ہے اور اب خبر سامنے آئی ہے کہ حکومت نے جیل میں قیدیوں سے ملاقات کا فائدہ اٹھانے کا سوچ لیا ہے۔جس تناظر میں یہ تجویز پیش کی گئی ہے کہ جیلوں میں وی آئی پی ملاقاتوں کی فیس رکھی جائے۔ابتدائی طور پر بتایا گیا ہے کہ وی آئی پی قیدیوں سے ملاقات کی فیس دو سے تین ہزار روپے رکھی گئی ہے۔

تازہ ترین خبریں