05:22 pm
پاکستان کے اہم شہر میں پٹرولنگ پولیس نے بہن کیساتھ منگیتر سے ملنے آئی لڑکی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

پاکستان کے اہم شہر میں پٹرولنگ پولیس نے بہن کیساتھ منگیتر سے ملنے آئی لڑکی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

05:22 pm

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان میں پولیس کا کردار کسی ڈھکا چھپا نہیں ہے ، پنجاب پولیس اس حوالے جس قدر ہو سکتی ہے اتنی بدنام ہے ۔ ایک واقعے پر لعن طعن ختم ہوتی ہے تو دوسرا شروع ہو جاتا ہے ۔ اب تازہ ترین میڈیا رپورٹس کے مطابق پٹرولنگ پولیس رتہ ٹبہ کے اہلکاروں نے مبینہ طور پر لڑکی کو گینگ ریپ کا نشانہ بناڈالاہے ۔ چشتیاں کی رہائشی کرن اپنی بہن ارم کے ساتھ اپنے منگیتر سے ملنے رتہ ٹبہ آئی ہوئی تھی، دونوں بہنیں اپنے منگیتر محمد شعیب کے ہمراہ ہوٹل پر کھانے کھارہے تھے
کہ پٹرولنگ پولیس رتہ ٹبہ کے اہلکاروں نے پکڑ لیا۔پٹرولنگ پولیس کے اہلکاروں نے ارم اور شعیب کو پکڑنے کے بعد چھوڑ دیا اور کرن کو ساتھ گاڑی میں بٹھا کر لے گئے۔پٹرولنگ پولیس کے اہلکار عاصم غفار ۔ محمد یعقوب ۔ عرفان جاوید اور الطاف نے لڑکی کو نامعلوم مقام پر لے جاکرمبینہ طور پر باری باری زیادتی کا نشانہ بناڈالا۔پٹرولنگ پولیس کے اہلکاروں نے مبینہ زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد چشتیاں کی بس پر بٹھادیا۔ متاثرہ لڑکی تھانہ لڈن پہنچ گئی۔ لڑکی کو مبینہ طور پر گینگ ریپ کا نشانہ بنانیوالے پٹرولنگ پولیس کے تین اہلکاروں کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ متاثرہ لڑکی تھانہ لڈن میں موجود ، پولیس نے میڈیا کے داخلہ پر پابندی لگادی

تازہ ترین خبریں