01:33 pm
وزیراعظم کوئی بھی بن جائے مجھے عمران خان قبول نہیں

وزیراعظم کوئی بھی بن جائے مجھے عمران خان قبول نہیں

01:33 pm

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )سینئرصحافی رحیم اللہ یوسفزئی نے مولانافضل الرحمٰن کے آزادی مارچ کے حوالے سے کہاکہ مولانااپنے ساتھیوں سے کہتے ہیں کہ اکتوبرمیں مارچ ہے توپھرسردی ہوجائے گی اورسردی میںتحریک کوچلانامشکل ہوجائیگایہ ایک دلیل دی گئی ہے شایداوربھی وجوہات ہوں گی۔انہوں نے کہاکہ میں تویہ کہوں گاکہ عمران خان کے بارے میں مولاناکوئی بھی مفاہمت کرنے کوتیارنہیںیعنی یہ اگرکوئی اوروزیراعظم ہوتایاکوئی اورحکومت ہوتی تویہ شایدایسانہ کرتے۔
عمران خان سے ان کوشدیدنفرت ہےاورمیرے خیال میں ان سے وہ بات چیت بھی نہیں کریں گے،محمدمالک نے رحیم اللہ یوسفزئی سے کہاکہ ان کی ایک بہت مقتدرشخصیت سے ملاقات ہوئی انہیں بلایاگیااورپوچھاگیاکہ آپ کامسئلہ کیاہے تومولانانے کہاکہ جی عمران خان کوہٹادیں باقی جس کومرضی بنادیںمولاناکوبتایاگیاکہ اس طرح نظام نہیں چلتااوراس طرح تبدیلی نہیں ہوگی۔مولاناکویہ توکلیئرہوگیاہے کہ اس طرح نہیں ہوگااس کے باوجودوہ دائوپرلگارہے ہیں صرف اس لیے کہ ان کی انامجروح ہوئی ہے ۔انااگرمجروح ہوتی تومولاناماضی میں ایسےکمپرومائز نہ کرتےجن میں اناکابڑاتعلق تھا۔رحیم اللہ یوسفزئی نے کہاکہ بالکل انہوں نےکمپرومائزز کیے ہیںان کے بارے میں توسب کہتے ہیں کہ بڑے زیرک سیاستدان ہیںاورمعاملات کوسمجھتے ہیں یہ اس حدتک جاتےہیںجہاں تک ممکن ہو یعنی پھریہ واپسی بھی کرتے ہیں۔ان کاارادہ ہے کہ عمران خان کوہٹاناہے دبائوڈالناہے زیادہ کام توانہیں خودہی کرناپڑے گاباقی جماعتیں ٹوکن قسم کی سپورٹ کریں گی۔

تازہ ترین خبریں