12:34 pm
 چین تھر کول کو ڈیزل میں بدلنے کیلئے بھی پاکستان کی مدد کو تیار

چین تھر کول کو ڈیزل میں بدلنے کیلئے بھی پاکستان کی مدد کو تیار

12:34 pm

اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) چین تھر کول کو ڈیزل میں بدلنے کیلئے بھی پاکستان کی مدد کو تیار ہے اور اس حوالے سے پاکستانی حکام نے چین کی شین ہوا ننگ ژیا کول انڈسٹری سے رابطہ کرلیا ہے جسے کول کو مائع میں تبدیل کرنے کیلئے جانا جاتا ہے۔ شین ہوا ننگ ژیا کول انڈسٹری گروپ چین کے سب سے بڑے کول پروڈیوسر کا ذیلی ادارہ ہے۔ یہ گروپ کول کو آئل میں تبدیل کرنے کا پراجیکٹ شمال مغربی چینی ریجن ننگ ژیا میں لگا چکا ہےجو دنیا میں اپنی نوعیت کا سب سے بڑا پلانٹ ہے۔
وزیر اعظم کے مشیر برائے پٹرولیم ندیم بابر نے دی نیوز کو بتایا کہ ہم نے مذکورہ کمپنی کی انتظامیہ کے ساتھ ابتدائی ملاقات کرلی ہے اور کامیاب معاہدے تک پہنچنے کیلئے مزید مذاکرات بھی کیے جائیں گے اور یہ اہم پیشرفت اس وقت ہوئی ہے جب وزیراعظم عمران خان 8 اکتوبر کو چین گئے تھے اور اپنے وفد کا رکن ہونے کے ناطے وہ مذکورہ چینی کمپنی کی اعلیٰ انتظامیہ سے ملاقات کرچکے ہیں۔ وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد حسین چوہدری نے چینی کمپنیوں کو دعوت دی کہ وہ حکومت کی طرف سے سرمایہ کاری کے لئے پیش کی جانے والی مراعات سے فائدہ اٹھائیں ، پاکستان میں شمسی پینل اور لیتھیم بیٹری مینوفیکچرنگ یونٹس قائم کریں ۔ فواد چوہدری نے ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایم ای آر اے پی سی سلوشنز کے سی ای او سے ملاقات کے دوران کیا ۔ انہوں نے کہا کہ شمسی اور لیتھیم بیٹری مین وفیکچرنگ میں بے پناہ صلاحیت رکھتا ہے اور ان مصنوعات کے افریقہ ، مشرق وسطی ، وسطی ایشیاء اور افغانستان کو برآمدات کے بڑے مواقع موجود ہیں.وفاقی وزیر اتوار کی صبح5روزہ دورہ پر چین پہنچے ہیں،انہوں نے کہا ہے کہ حکومت چینی کمپنیوں کو مشترکہ منصوبوں سیمت زمین ، تکنیکی مدد اور انسانی وسائل سمیت تمام سہولیات مہیا کرے گی۔

تازہ ترین خبریں