03:32 pm
نواز شریف زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ہیں،مریم نواز جس طریقے سے جیل بھگت رہی ہیں کوئی سوچ بھی نہیں سکتا

نواز شریف زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ہیں،مریم نواز جس طریقے سے جیل بھگت رہی ہیں کوئی سوچ بھی نہیں سکتا

03:32 pm

ملتان (نیوز ڈیسک) سیاستدان جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ مریم نواز جس طریقے سے جیل بھگت رہی ہیں کوئی سوچ بھی نہیں سکتا۔تفصیلات کے مطابق جاوید ہاشمی نے ملتان میں اپنی رہائش گاہ پر میڈیا سے گفتگو میں کہا ہے کہ سیاسی جماعتوں کا ایجنڈا سو سالوں پر محیط ہوتا ہے۔بدقسمتی سے ہمارے ملک میں ایسا نظام رائج ہے کہ یہاں کوئی سیاستدان پیدا نہیں ہو سکتا۔جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمن میرے چھوٹے بھائی ہیں۔ان کے آزادی مارچ پر سب جماعتیں سوچ بوجھ کے بعد متفق ہوئی ہیں تاہم میں اب کہتا ہوں
کہ عمران خان کو پانچ سال حکومت کرنے دیں۔نواز شریف کی اسیری پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ملک میں احتساب مکمل طور پر انتقام بن چکا ہے،جیل میں سہولتیں پوری دنیا میں ملتی ہیں،مگر یہاں پر تو اسپتال لے جانے کی اجازت بھی نہیں ہوتی۔انہوں نے مزید کہا کہ مریم نواز جس طریقے سے جیل بھگت رہی ہیں کوئی سوچ بھی نہیں سکتا۔جب کہ میاں نواز شریف زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ہیں۔جب کہ دوسری جانب سروسز اسپتال میں زیر علاج سابق وزیر اعظم نواز شریف کا خصوصی میڈیکل بورڈ نے طبی معائنہ کیا ہے۔سابق وزیر اعظم نواز شریف کو طبیعت بگڑنے پر گزشتہ رات لاہور کے سروسز اسپتال منتقل کیا گیا تھا ، جہاں وہ اب بھی زیر علاج ہیں، ان کے لئے اسپتال کا وی آئی پی کمرہ مختص کیا گیا ہے۔ نیب نے اس کمرے کو سب جیل قرار دے دیا ہے۔دوسری جانب نوازشریف کے علاج کے لیے 5 رکنی میڈیکل بورڈ تشکیل دیا گیا ہے جس نے سابق وزیر اعظم کا معائنہ بھی شروع کردیا ہے۔ اسپتال ذرائع کا کہنا ہے کہ فی الحال نوازشریف کو دی گئی خون پتلا کرنے والی دوائی روک دی گئی ہے. معالجین نے نواز شریف کے پلیٹ لیٹس میں مزید کمی کو دیکھتے ہوئے انہیں نئے پلیٹ لیٹس لگانے کی تیاری کرلی ہے، اس سلسلے میں تمام ٹیسٹ مکمل کر لیے گئے ہیں۔واضح رہے کہ نواز شریف کوٹ لکھپت جیل میں قید تھے تاہم چوہدری شوگر مل کیس میں نیب نے انہیں اپنی تحویل میں لیا تھا۔