05:55 pm
لڑکی نے مختصر لباس پہن رکھا تھا جس کی وجہ سے میرا موڈ بن گی

لڑکی نے مختصر لباس پہن رکھا تھا جس کی وجہ سے میرا موڈ بن گی

05:55 pm

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) یورپی مُلک آئر لینڈ میں پولیس نے ایک بڑی عمر کے مرد کو 20 سالہ لڑکی کو جسمانی چھیڑ چھاڑ اور زیادتی کا نشانہ بنانے پر گرفتار کر لیا ہے۔ تاہم 50 سالہ شخص نے خوبرو دوشیزہ کے ساتھ جنسی زیادتی کے معاملے پر انوکھا موقف پیش کیا ہے۔ ملزم رچرڈ نکین کا کہنا تھا کہ اگر لڑکی نیم عریاں نہ ہوتی تو وہ اُسے جنسی طور پر ہراساں نہ کرتا۔اس سارے معاملے میں اُس کا اپنا قصور نہیں ہے،
بلکہ خود لڑکی ہی اپنے ساتھ ہونے والی جنسی ہراسگی کی ذمہ دار ہے۔ برطانوی اخبار انڈی پینڈنٹ کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ رچرڈ نکین نے اپنی عمر کا لحاظ کیے بغیر میڈیکل کی 20 سالہ طالبہ کو راہ چلتے ہوئے دو بار جنسی ہراساں کی، اور اُسے زیادتی کا نشانہ بھی بنا ڈالا۔رچرڈ کی جانب سے اپنے جُرم کے دفاع میں عجیب و غریب منطق پیش کیے جانے کی خبر برطانیہ میں ہی نہیں، بلکہ پُوری دُنیا میں مشہور ہو گئی ہے۔رچرڈ مکین نے عدالت میں کہا کہ خاتون کے جسم کے مخصوص حصّے ظاہر ہو رہے تھے، اس لیے اُس سے زبردستی کرنے کا مُوڈ بن گیا ۔ ملزم نے اپنے دفاع میں مزید غیر منطقی دلائل دیتے ہوئے کہا کہ چونکہ وہ دراز قد ہونے کے ساتھ ساتھ خوبصورت بھی ہیں، اس وجہ سے کئی بار خواتین نے بھی اُن کا پیچھا کیا ہے۔ رچرڈ نے جنسی زیادتی کا نشانہ بننے والی لڑکی کو بھی قصور وار ٹھہراتے ہوئے کہا کہ اُسے زیادتی کے اس معاملے کی شکایت پولیس کو کرنی بنتی ہی نہیں تھی، کیونکہ وہ نیم عریاں ہونے کے باعث خود ہی اس سارے واقعے کی ذمے دار ہے۔وہ اس سارے معاملے میں بے قصور ہیں۔ جنسی ہراسگی اور زیادتی کا نشانہ بننے والے لڑکی نے بتایا کہ رچرڈ نے اُسے ایک ہی دِن میں دو بار جنسی ہراساں کیا۔ پہلی بار ملزم نے اُسے سُنسان سڑک پر اکیلا پا کر چھیڑا اور اس سے اخلاق سے گری گفتگو کی اور دوسری بار اُسے نائٹ کلب سے نکلتے وقت جنسی ہراسگی کا نشانہ بنایا۔ ملزم نے اس کے جسم کو انتہائی نامناسب انداز میں چھوا اور ساتھ ہی اُسے ڈرایا دھمکایا بھی تھا۔اخبار کے مطابق متاثرہ لڑکی نے اپنی تعلیمی مصروفیات کی وجہ سے مقدمہ دائر کرنے کی درخواست واپس لے لی تھی، تاہم سرکاری وکلا نے ملزم کو سزا دینے کے حوالے سے عدالت میں ثبوت پیش کیے۔ڈبلن کی عدالت میں سرکاری وکلاء کی جانب سے دلائل دیئے گئے کہ کسی خاتون کا مختصر لباس اس کی جنسی عمل کے لیے رضامندی کو ظاہر نہیں کر رہا ہوتا۔ایسی دلیل دینا اپنی شرمناک حرکت کو بھونڈا جواز فراہم کرنا ہے۔