09:35 am
پنڈی سے ڈارک ویب کے سرغنہ کی گرفتاری کے بعد مزید دہلا دینے والے انکشافات،

پنڈی سے ڈارک ویب کے سرغنہ کی گرفتاری کے بعد مزید دہلا دینے والے انکشافات،

09:35 am

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) راولپنڈی پولیس نے بچوں سے زیادتی کرنے والے انٹرنیشنل ڈراک ویب کے سرغنہ سہیل ایاز کے قریبی ساتھی خرم کالا کو گرفتار کر لیا۔تفصیلات کے مطابق انٹرنیشنل ڈارک ویب کے سرغنہ سہیل ایاز کے جرائم کی تحقیقات میں اہم پیش رفت ہوئی ہے۔راولپنڈی میں تھانہ راوت پولیس نے سہیل ایاز کے ہاتھوں اغوا ہونے والے 12 سالہ بچے عدیل خان کو برآمد کر لیا جو انڈے بیچ کر روزی کماتا تھا۔
پولیس نے ملزم سہیل ایاز کی قیمتی گاڑی بھی برآمد کر لی۔سی پی او فیصل رانا نے بتایا کہ سہیل ایاز نے بچے کو اغوا کیا۔آئس پلا کر بد فعلی کی اور اسے دو ماہ تک اپنے پاس رکھا بعدازاں اپنے ساتھی خرم کالا کے پاس بھیج دیا۔جس نے مغوی عدیل کے ساتھ زیادتی کی۔ سی پی او کا کہنا ہے کہ ملزم خرم عرف کالا کو بھی گرفتار کر لیا گیا ہے جس نے تفتیش کے دوران بتایا کہ سہیل ایاز بچوں کو زیادتی کے لیے سپلائی کا کام کرتا تھا،جس کے ساتھ ساتھ وہ چرس اور آئس بیچنے کا بھی دھندہ کرتا تھا۔ جب کہ دوسری جانب ،ملکی و عالمی میڈیا پر ملزم کی گرفتاری کی خبر سن کر اڑھائی ماہ سے لاپتہ بچے کے بھائی نے ملزم کے خلاف اغواء کا مقدمہ درج کروا دیا ،ملزم کی سفاکیت کا نشانہ بننے والے ایک اور بچے نے ملزم کے خلاف بدفعلی کا مقدمہ درج کروا دیا،،سی پی او فیصل رانا نے کہا کہ انٹر نیشنل ڈارک ویب کے سرغنہ گرفتار ملزم سہیل ایاز کے مقدمات کی تفتیش کے لئے ایس ایس پی انوسٹی گیشن محمد فیصل کی سربراہی میں ایک کمیٹی تشکیل دی۔جس میں ایس پی صدر رائے مظہر اقبال،ایس ڈی پی او صدر سرکل فرحان اسلم،ایس ڈی پی او گوجر خان سرکل محمد وقاص،ڈی ایس پی انوسٹی گیشن2طاہر سکندر،ایس ایچ او تھانہ روات محمد کاشف،سب انسپکٹر ظہور احمد ، اے ایس آئی زین العابدین اور اے ایس آئی تصدق الرحمان شامل ہوں گے ،یہ کمیٹی ملزم سہیل ایاز کے خلاف درج مقدمات کی تفتیش کرے گی،سی پی او نے کہا کہ اس حوالے سے میں روزانہ اجلاس لوں گا ہم نے انٹرنیشنل ڈارک ویب کے سرغنہ سہیل ایاز کی سفاکیت کا نشانہ بننے والے ایک ایک بچے کی ایف آئی آر درج کرنا ہے ،متاثرہ بچوں کے ورثاء کو مکمل تحفظ کی گارنٹی دے کر ان کی مدعیت میں مقدمات درج کئے جائیں اگر ورثاء سماجی دباؤ کی وجہ سے سامنے آنے سے گریزاں ہوں تو پولیس اپنی مدعیت میں مقدمات درج کرنے کے لئے قانونی طریق کار اختیار کرے۔

تازہ ترین خبریں