06:34 am
نواز شریف کا حکومت کو ایک روپیہ بھی نہ دینے کا فیصلہ

نواز شریف کا حکومت کو ایک روپیہ بھی نہ دینے کا فیصلہ

06:34 am

لاہور : حکومت نے سابق وزیراعظم نواز شریف کے بیرون ملک جانے کی اجازت رکھی ہے جس کے تحت اگر تو نواز شریف باہر جانا چاہتے ہیں تو انہیں 7 ارب روپے کے شورٹی بانڈ دینا ہوں گے،تاہم ن لیگ نے حکومت کی انڈیمنٹی بانڈز کی شرط مسترد کر دی،ن لیگ کا خیال ہے کہ حکومت بانڈر کی صورت میں عوام کو دھوکے کی طرف لے کر جانا چاہتی ہے کہ ہم نے ان سے 7 ارب نکلوا لی، شہباز شریف اور میں اس شرط کو مسترد کرتے ہیں،عدالت کا دروازہ کھٹکٹھائیں گے۔
 
یہی بات دو روز قبل مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف نے کی۔نوازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست قابل سماعت قرار دے دی گئی ہے جس پر آج سماعت ہو گی۔جہاں حکومت ایک طرف ڈٹی ہوئی ہے کہ نواز شریف کو شورٹی بانڈز کے بغیر نہیں جانے دینا وہیں ن لیگ بھی اس موقف پر ڈٹی ہوئی ہے کہ ہم کوئی شورٹی بانڈز نہیں دیں گے کیونکہ عدالت میں ضمانتی مچلکے جمع کروائے جا چکے ہیں۔ اسی پر تجزیہ پیش کرتے ہوئے سینئیر صحافی کا کہنا محمد مالک کا کہنا تھا کہ میری کچھ لوگوں سے بات ہوئی جنہوں نے مجھے بتایا کہ میاں صاحب نے کہا کہ ان کو تو میں ایک ٹکا نہیں دوں گا لیکن عدالت جو مانگے گی اسے دوں گا۔جس سے واضح ہوتا ہے کہ نواز شریف عدالت کو کچھ بھی دینے کو تیار ہیں لیکن حکومت کو کچھ بھی نہیں دیں گے کیونکہ اس صورت میں حکومت اسے اپنی کامیابی سمجھے گی۔ جب کہ دوسری جانب وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے احتساب کا کہنا ہے کہ مسلم لیگ ن کے ایک حصے نے عدالت کے فیصلوں کا کبھی احترام نہیں کیا ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کی بیماری پر ن لیگ سیاست کر رہی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت سابق وزیر اعظم نواز شریف کی بیماری پر سیاست بالکل نہیں کر رہی حکومت نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نہیں نکال سکتی۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ انڈیمنٹی بانڈ میں وہ رقم مانگی گئی جو عدالت نے جرمانہ عائد کیا۔بیرسٹر شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ نواز شریف کو تحریک انصاف نے نہیں عدالتوں نے جرمانہ کیا۔ اگر وہ واپس نہیں آتے تو عدالت ہم سے پوچھ سکتی ہے۔ اگر عدالت انہیں بیرون ملک جانے دیتی ہے تو حکومت کو کوئی اعتراض نہیں ہوگا۔

تازہ ترین خبریں