09:37 am
’’نوازشریف وطن واپس آئیں گے یا نہیں ؟ ‘‘شہباز شریف نے بیان حلفی عدالت میں جمع کروادیا

’’نوازشریف وطن واپس آئیں گے یا نہیں ؟ ‘‘شہباز شریف نے بیان حلفی عدالت میں جمع کروادیا

09:37 am

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) سابق وزیراعظم نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے لیے لاہور ہائیکورٹ میں دائر درخواست پر سماعت جاری ہے۔ عدالت نے نواز شریف اور شہباز شریف سے بیان حلفی طلب کیا تھا جو اب عدالت میں جمع کروا دیا گیا ہے۔ دو صفحات پر مشتمل نواز شریف اور شہباز شریف کا بیان حلفی وکلا نے عدالتی عملے کے حوالے کیا۔ بیان حلفی میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف ٹھیک ہوتے ہی وطن واپس آجائیں گے۔ نواز شریف وطن واپس آ کر اپنے خلاف کیسز کا سامنا کریں گے۔
یاد رہے کہ لاہور ہائیکورٹ نے نواز شریف کی واپسی سے متعلق بیان حلفی مانگا تھا۔ عدالت نے کہا تھا کہ نواز شریف اور شہباز شریف سے لکھ کر ضمانت لے لیتے ہیں، بیان حلفی لکھ کر دیں، عدالت حتمی فیصلہ کرے گی ۔ لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس علی باقر نجفی کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست پر سماعت کر رہے ہیں۔ دوران سماعت عدالت نے استفسار کیا تھا کہ کیا حکومتی میمورینڈم انسانی بنیادوں پر جاری کیا گیا ہے، نواز شریف کے وکیل بتائیں کہ کیا نواز شریف شورٹی کے طور پر کچھ دینا چاہتے ہیں یا نہیں، نواز شریف سے ہدایات لے کر عدالت کو آگاہ کیا جا سکتا ہے۔ عدالت نے استفسار کیا شہباز شریف آپ بتائیں کس طرح کی ضمانت دینے پر تیار ہیں ؟ کیا نواز شریف واپس آئیں گے ؟ جس پر شہباز شریف نے کہا نواز شریف صحتیاب ہونے کے بعد وطن آئیں گے۔ عدالت نے شہباز شریف سے استفسار کیا آپ کا نواز شریف کو وطن واپس لانے میں کیا کردار ہوگا ؟ جس پر شہباز شریف نے کہا کہ نواز شریف کے ساتھ بیرون ملک جا رہا ہوں۔ یاد رہے لاہور ہائیکورٹ نے گزشتہ روز سابق وزیراعظم نواز شریف کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) سے نکالنے کی درخواست کو قابل سماعت قرار دیا۔ عدالت نے کہا لاہور ہائیکورٹ اس درخواست کو سننے کا اختیار رکھتی ہے۔ دوسری جانب شریف خاندان کو صرف عدالتی فیصلے کا انتظار ہے ، عدالت کا فیصلہ حق میں آتے ہی سابق وزیراعظم نواز شریف کو بیرون ملک روانہ کر دیا جائے گا۔

تازہ ترین خبریں