09:26 pm
مولانا کے دھرنے کے شرکاء کھاناکہاں سے کھاتے رہے، فواد چوہدری نے حیرت انگیزدعویٰ کردیا

مولانا کے دھرنے کے شرکاء کھاناکہاں سے کھاتے رہے، فواد چوہدری نے حیرت انگیزدعویٰ کردیا

09:26 pm

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری نے نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کے دھرنے کے شرکا وزیراعظم عمران خان کی جانب سے بنائی گئی پناہ گاہوں سے کھانا کھاتے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کافی لوگوں نے انہی پناہ گاہوں سے کھانا کھایا
، یہاں تک کہ پناہ گاہوں میں راشن بھی ختم ہو گیا تھا۔یاد رہے کہ جمیعت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کے آزادی مارچ کے شرکا نے چودہ روز تک وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں دھرنا دیا جس کے بعد مولانا فضل الرحمان نے پلان بی کا اعلان کرتے ہوئے دھرنا ختم کرنے کا اعلان کیا تھا۔آزادی مارچ کے اسلام آباد میں پڑاؤ کے بعد اس کے آس پاس کئی افراد نے کھانوں کے مختلف اسٹالز لگا لیے تھے جہاں سے دھرنے کے شرکا کھانا لے کر کھاتے تھے لیکن وفاقی وزیر کا دعویٰ ہے کہ دھرنے کے کئی شرکا نے وزیراعظم عمران خان کی جانب سے بنائی جانے والی پناہ گاہوں سے کھانا کھایا تھا۔دوسری جانب پاکستان ٹوڈے کی رپورٹ کے مطابق جمیعت علمائے اسلام (ف) کے آزادی مارچ کی سکیورٹی کے لیے حکومت نے سخت انتظامات کر رکھے تھے اور ان سکیورٹی انتظامات پر کم و بیش 52 ملین روپے خرچ کیے گئے۔ اس کے علاوہ وفاقی دارالحکومت کے کئی راستوں کو 680 کنٹینرز لگا کر بند بھی کیا گیا تھا۔ ایک کنٹینر کا ایک روز کا کرایی 5 لاکھ روپے طے کیا گیا تھا جو چودہ روز کے لیے 71.40 ملین روپے تک جا پہنچا۔ جبکہ آزادی مارچ کی وجہ سے 31 اکتوبر سے لے کر 15 نومبر تک میٹرو بس سروس بھی معطل رہی جس سے 3.30 ملین روپے یومیہ نقصان ہوا تھا۔

تازہ ترین خبریں