12:02 pm
پی ٹی آئی اراکین اسمبلی وزیراعلیٰ پنجاب کی کارگردگی پر نالاں

پی ٹی آئی اراکین اسمبلی وزیراعلیٰ پنجاب کی کارگردگی پر نالاں

12:02 pm

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے اراکین اسمبلی نے بھی حکومتی کارگردگی پر تحفظات کا اظہار کیا ہے۔تفصیلات کے مطابق حکومتی ذرائع کے مطابق اراکین اسمبلی نے وزیراعلیٰ کو بیوروکریسی اور محکموں پر کنٹرول بڑھانے کا مشورہ دیا اور اپنے لیے فنڈز کا بھی مطالبہ کردیا۔
ذرائع نے بتایا ہے کہ اراکین اسمبلی کو فنڈز جاری نہ کیے گئے تو بلدیاتی انتخابات میں بری طرح پٹ جائیں گے۔ اراکین اسمبلی نے سیساسی بنیادوں پر اراکین اسمبلی سے مشاورت کے ساتھ بھرتیوں کا عمل فوری شرووع کرنے کا بھی مشورہ دے دیا۔انہوں نے مشورہ دیا کہ پی ٹی آئی سے منسلک افراد کو ہنگامی بنیادوں پر سیاسی عہدے پر فائز کیا جائے۔انہوں نے شکوہ کیا ہے کہ سیکریٹریز وزراء کی نہیں سنتے تو اراکین اسمبلی کی کیا سنیں گے؟ بیوروکریسی کو اراکین اسمبلی کے ساتھ تعاون کرنے کا پابند بنایا جائے۔ اراکین اسمبلی نے عثمان بزدار کو سیکرٹریز کے ساتھ سخت رویہ اپنانے کا مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ عوامی مسائل کو فوری حل یقینی بنایا جائے۔وزیراعلیٰ نے بھی اراکین اسمبلی کو مسائل فوری حل کرانے کی یقین دہانی کروا دی۔جب کہ دوسری جانب یوزر اعلیٰ عثمان بزدار نے متعلقہ حکام کو صوبہ بھر میں غیر مسلم ملازمین کا ڈیٹا مرتب کرنے کی ہدایت کردی تاکہ ان کے حقوق کے تحفظ کو یقینی بنایا جاسکے۔ وزیراعلیٰ نے مذکورہ ہدایت ڈاکٹر شعیب سڈل کی زیرصدارت اقلیتی حقوق کے قومی کمیشن کے وفد سے ملاقات میں دی۔اجلاس میں اقلیتوں کی فلاح و بہبود سے متعلق سہولیات کی فراہمی اور امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔عمثان بزدار نے کہا کہ اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کے لیے پنجاب کو ایک ماڈل بنایا جارہا ہے اور 'پنجاب اقلیتی بااختیار پیکیج' اقلیتوں کی بہبود کے حوالے سے ایک مثالی پروگرام ثابت ہوگا۔انہوں نے کہا کہ یوحنا آباد کو 30 کروڑ روپے کی لاگت سے ماڈل ایریا بنایا جائے گا۔