05:36 pm
وزیر اعظم کا سینئر صحافی ارشاد بھٹی کو انٹرویو

وزیر اعظم کا سینئر صحافی ارشاد بھٹی کو انٹرویو

05:36 pm

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)وزیر اعظم عمران خان نے سینئر ملکی صحافی ارشاد بھٹی کو ایک ایسا انٹرویو دے ڈالا ہے کہ نئی سیاسی صورتحال میں جنگل میں منگل ہو گیا ہے۔صحافی نے سوال کیا کہ کچھ لوگ کہہ رہے ہیں کہ مارچ یا اپریل میں نئی حکومت آرہی ہے۔ اس پر وزیر اعظم نے جواب دیا کہ وہ مارچ یا اپریل 2025کی بات کر رہے ہوں گے۔ صحافی نےسوال کیا کہ فارن فنڈنگ کیس حکومت اور پارٹی دونو ں پر تلوار بن کر لٹک رہا ہے۔
جس پر انھوںنے جواب دیا کہ فارن فنڈنگ کیس چلے گا، حکومت مضبوط ہے، مجھے یا حکومت کو اس سے کوئی خطرہ نہیں ہے۔ افواہیں چلتی رہتی ہیں کچھ لوگوں کو میرا چہرہ پسند نہیں ہے لیکن انھیں میر اچہرہ ساڑھے تین سال برداشت کرنا پڑے گا۔ مولانا فضل الرحمان کے مارچ کے دوران آفرز کے دعوے پر وزیراعظم نے قہقہہ لگایا اور کہا کہ مولانا کا کوئی علاج نہیں ہے۔ وزیراعظم نے کشمیر میں کرفیو، سانحہ ساہیوال اور مہنگائی کو غم کا لمحہ قرار دےدیا۔ انھوںنے بھارتی طیارہ گرانے کو خوشی کا لمحہ قرار دیا۔انھوںنے ارشاد بھٹی سے کہا کہ مجھے دو ہفتوں کی ڈیڈ لائن دیں۔ اور دیکھیں تب تک کتنی تبدیلی آچکی ہوگی۔آرمی چیف کے بارے میں وزیراعظم کا کہناتھا کہ میں نے اپنی زندگی میں اتنا متوازن ذہن، اتنا متوازن آدمی اور اتنا ڈیموکریٹک آرمی چیف آج تک نہیں دیکھا۔جب اقتدار سنبھالا تو تین ما ہ میں ہی فیصلہ کر لیا تھا کہ آرمی چیف جنرل باجوہ ہی رہیں گے۔ کچھ لوگوںنے جنرل باجوہ کے عہدے کی توسیع کے بارے میں افواہیں پھیلائیں لیکن یہ فیصلہ پہلے ہی ہوچکا تھا۔

تازہ ترین خبریں