11:23 am
پاکستانی ٹی وی چینلز دیکھنے سے علاج متاثر ہورہا ہے، حسین نواز نے والد کو ٹی وی دیکھنے سے روکنے کی کوششیں شروع کردیں

پاکستانی ٹی وی چینلز دیکھنے سے علاج متاثر ہورہا ہے، حسین نواز نے والد کو ٹی وی دیکھنے سے روکنے کی کوششیں شروع کردیں

11:23 am


لاہور(نیوز ڈیسک)مسلم لیگ ن کے قائد اور سابق وزیراعظم نوازشریف کے صاحبزادے حسین نواز نے کہا ہے کہ کوشش ہے کہ نوازشریف پاکستانی ٹی وی چینلزنہ دیکھیں، ٹی وی دیکھنے سے علاج متاثر ہوتا ہے، انفیکشن کے خطرے سے بچنے کیلئے ہسپتال کی بجائے گھرمیں علاج کیا جا رہا ہے۔ سابق وزیراعظم نوازشریف کے صاحبزادے حسین نواز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نوازشریف کے پلیٹ لیٹس کی تشخیص اورعلاج ساتھ ساتھ چل رہا ہے۔
 
ڈاکٹر اسٹرائیڈز کی ہیوی ڈوز کو ختم کرنا چاہتے ہیں۔ اسٹرائیڈز کے اثرات ختم ہوتے ہی بون میرو کی تشخیص کا عمل شروع ہو جائے گا۔ حسین نواز نے کہا کہ ڈاکٹرعدنان روزانہ کی بنیاد پر شوگر، بلڈ پریشر اور ہارٹ بیٹ چیک کرتے ہیں۔ انفیکشن کے خطرے سے بچنے کیلئے ہسپتال کی بجائے گھرمیں علاج کیا جا رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ کوشش ہے کہ نوازشریف پاکستانی ٹی وی چینلز نہ دیکھیں۔واضح رہے گزشتہ روز لندن میں علاج کے لیے مقیم سابق وزیراعظم نوازشریف دل کا معائنہ کرانے کیلئے لندن برج ہسپتال پہنچے جہاں ان کے مختلف ٹیسٹ لئے گئے ۔نوازشریف لندن میں علاج کی غرض سے 19 نومبر سے موجود ہیں اوراس دوران وہ 3 بار طبی معائنے کے لیے گھرسے باہرنکلے ہیں۔دو روز قبل لندن کے یونیورسٹی اسپتال میں دل کے ماہر معالج ڈاکٹرلارنس نے نوازشریف کا طبی معائنہ کیا تھا۔اس حوالے سے نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کا کہنا تھا کہ سابق وزیراعظم نے ڈاکٹر لارنس سے یونیورسٹی کالج اسپتال (ہارٹ اسپتال) میں دل کا معائنہ کرایا، ان کو دل سے متعلق ٹیسٹ اور علاج کا روڈمیپ دیا گیا ہے۔ڈاکٹر عدنان کے مطابق ڈاکٹر لارنس گائز اسپتال کے ہیماٹولجسٹس کی معاونت سے نواز شریف کا علاج کریں گے۔اس سے قبل پاکستان سے برطانیہ پہنچنے کے بعد لندن کے گائز اسپتال میں نواز شریف کا 4 گھنٹے تک طبی معائنہ ہوا تھا اس دوران ان کے دل کے معائنے کے ساتھ خون کے ٹیسٹ بھی کیے گئے تھے جن کے نتائج آئندہ چند روز میں آئیں گے۔نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے کہا ہے کہ ڈاکٹروں نے محمد نواز شریف کوہسپتال میں داخل ہونے کی ہدایت کی ہے، ان کا پی ای ٹی سکین جمعرات کو ہو گا۔