01:48 pm
تحریک انصاف کے کس رہنما کو وزارت عظمیٰ سنبھالنے کے ٹاسک پر لگادیا گیا

تحریک انصاف کے کس رہنما کو وزارت عظمیٰ سنبھالنے کے ٹاسک پر لگادیا گیا

01:48 pm

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان پیپلز پارٹی کی رہنما شہلا رضا کا کہنا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے اپنے لوگ ہی پنجاب میں وزیراعلیٰ کے خلاف کھڑے ہیں۔شہلا رضا نے مزید کہا کہ وزیراعلیٰ کی بات تو چھوڑیں اب تو وزیراعظم کے خلاف بھی کئی لوگ کھڑے ہیں جن کا تعلق بھی پاکستان تحریک انصاف سے ہے۔شہلا رضا نے کہا اگر شاہ محمود قریشی کی بات کریں تو وہ ایسی شخصیت ہیں جو پارٹی کے لیے قابلِ قبول ہیں۔
شہلا رضا نے کہا شاہ محمود قریشی کو ٹاسک دیا گیا ہے کیونکہ ظاہر سی بات ہے کہ 7 سیٹوں والے کو آپ نے 4 اہم وزارتیں دی ہوئی ہیں اور ایک وزارت کا وعدہ کیا جا رہا ہے تو عمران خان نے تو حکومت بنانے کے لیے کئی جماعتوں کو این آر او دیا۔اسی طرح شیخ رشید کی ایک سیٹ تھی انہیں بھی ایک وزارت دی گئی۔خیال رہے کہ اس سے قبل ہارون الرشید نے کہا تھا کہ کہ اپوزیشن کے تین اہداف ہیں ایک یہ کہ عمران خان کو عہدے سے ہٹایا جائے،ایک یہ کہ نئے الیکشن کروائے جائیں اور ایک یہ انہی کی پارٹی میں سے کسی اور کو وزیراعظم بنایا جائے،اس حوالے سے سنجیدگی سے بحث بھی ہوئی اور شاہ محمود قریشی کا نام سامنے آیا۔میں نے وزیراعظم کے لیے شاہ محمود قریشی کا نام سوچ سمجھ کر لیا تھا۔وہ چاہتے تھے کہ شاہ محمود قریشی کو وزیراعظم بنا دیا جائے اور اگر ایسا ہو جائے تو میں اسی دن ٹیلی ویژن چھوڑ دوں گا کیونکہ مصنوعی گفتگو زیادہ دیر نہیں سنی جا سکتی۔ہارون الرشید نے مزید کہا کہ اپوزیشن کی کوشش ہے کہ اتنا دباؤ ڈالا جائے کہ پارلیمانی کمیٹی بن جائے اور اس کے بعد الیکشن ہوں۔خیال رہے اس سے قبل بھی سینئیر تجزیہ کار ہارون الرشید نے حکومتی صفوں میں بغاوت کا عندیہ دیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ شاہ محمود قریشی وزیراعظم بننے کے لیے اندرون و بیرون ملک لابنگ کر رہے ہیں۔ اور بیرون ملک لابنگ کا جن کو پتہ چل سکتا تھا اُنہیں اِس کا پتہ چل گیا ہے جس کے بعد اب شاہ محمود قریشی کا وزیراعظم بننا تو بہت مشکل ہے لیکن اِس سے صورتحال کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔

تازہ ترین خبریں