05:11 pm
ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے استعمال سے انقلابی تبدیلیاں رونما ہوئی ہیں،صدر مملکت

ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے استعمال سے انقلابی تبدیلیاں رونما ہوئی ہیں،صدر مملکت

05:11 pm

اسلام آباد( آن لائن ) صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے استعمال سے انقلابی تبدیلیاں رونما ہوئی ہیں، پاکستان بھی ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے استعمال سے استفادہ کر سکتا ہے، ہمیں پاکستان میں انسانی وسائل کی ترقی پر توجہ مرکوزکرنا ہو گی۔
پیر کو یہاں ڈیجیٹل معاشرے میں پائیدار ترقی کے موضوع پر کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے صدر مملکت نے کہا کہ چوتھے صنعتی انقلاب نے زندگی کے ہر شعبہ میں اہم اثرات مرتب کئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے استعمال سے دنیا میں انقلابی تبدیلیاں رونما ہوئی ہیں، اس سے بہت سے چیلنجز بھی پیدا ہوئے ہیں اور اس کے مثبت اور منفی دونوں طرح کے اثرات ہیں، زندگی کے بہت سے شعبوں میں ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے مثبت پہلوئوں سے استفادہ کیا جا سکتا ہے۔صدر مملکت نے کہا کہ ہمیں جائزہ لینا ہو گا کہ ڈیجیٹل ٹیکنالوجی سے کیسے مستفید ہو سکتے ہیں اور کیسے اس سے استفادہ کرکے عوام کیلئے سہولت پیدا کی جا سکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے ذریعے عوام کی فلاح و بہبود کے پروگراموں میں بھی مدد مل سکتی ہے، اس سے احساس پروگرام کو کامیاب کرنے میں بھی معاونت ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ تجارت اور زراعت کے شعبوں میں بھی ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے استعمال سے انقلاب برپا کیا جا سکتا ہے، ڈیجیٹل ٹیکنالوجی سے مقامی طور پر اعلیٰ تعلیم کے مواقع پیدا ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ پائیدار ترقی کیلئے غریب اور امیر کے درمیان فرق اور معاشرتی تفریق ختم کرنا ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں پاکستان میں انسانی وسائل کی ترقی پر توجہ مرکوزکرنا ہو گی۔ قبل ازیں سماجی بہبود کیلئے وزیراعظم کی معاون خصوصی ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت پائیدار ترقی کے اہداف کے حصول کیلئے بھرپور اقدامات کر رہی ہے، کسی بھی ملک کیلئے انسانی وسائل بڑی اہمیت رکھتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ احساس پروگرام ملک میں غربت کے خاتمہ کیلئے اہم کردار ادا کرے گا، خواتین کو بھی سماجی بہبود کے مختلف پروگراموں میں بھرپور نمائندگی دی جا رہی ہے، حکومت ڈیجیٹل سلوشنز کے حوالہ سے کام کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ خواتین سمیت پاکستان کی تمام ا?بادی تک ڈیجیٹل سہولیات کی فراہمی کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں تاکہ اس کو بروئے کار لا کر سماجی و اقتصادی بہبود کے پروگراموں کو کامیاب بنانے میں مدد مل سکے۔

تازہ ترین خبریں