02:11 pm
پاکستان کے اعلیٰ ترین سرکاری ادارے میں انتہائی اہم عہدے پر رہنے والے شخص کو 400سال قید کی سزا سنا دی گئی

پاکستان کے اعلیٰ ترین سرکاری ادارے میں انتہائی اہم عہدے پر رہنے والے شخص کو 400سال قید کی سزا سنا دی گئی

02:11 pm

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان کے اعلیٰ ترین سرکاری ادارے میں انتہائی اہم عہدے پر رہنے والے شخص کو 400سال قید کی سزا سنا دی گئی ، پاکستان کا یہ خطرناک مجرم کون ہے ؟ جانیں ۔۔۔۔انسداد دہشت گردی کی عدالت نے سرگودھا کے ایک گاؤں میں 20 مریدین کو قتل کرنیوالے درگاہ کے متولی اور اس کے ساتھیوں کو سزائے موت سنادی۔درگاہ کے متولی عبدالوحید اور دیگر ساتھیوں ظفر ڈوگر، آصف اور کاشف گجر
کو مجموعی طور پر 400 سال قید کی سزا سنائی گئی ہے اور 5کروڑ روپے بطور جرمانہ قتل ہونیوالے افراد کے ورثا ء کو ادا کرنے کا حکم بھی جاری کیا ہے۔ یاد رہے کہ سرگودھا سے 17 کلومیٹر فاصلے پر چک 95 شمالی میں 2 اپریل 2017 کو المناک واقعے میں درگاہ علی محمد قلندر کے متولی نے ساتھیوں کیساتھ مل کر چاقو کے وار سے 20 افراد کو قتل کردیا تھا ۔ واقعے کی اطلاع پولیس کو ڈی ایچ کیو ہسپتال سرگودھا میں زخمی ایک خاتون نے دی تھی، خاتون کے مطابق یہ ان دیگر 3 زخمی افراد میں شامل تھی جو درگاہ سے زندہ بچ نکلنے میں کامیاب ہوگئے۔ واقعے کی اطلاع ملتے ہی پولیس کی بھاری نفری درگارہ پہنچی اور درگاہ کے متولی عبدالوحید کو اس کے 4 ساتھیوں سمیت گرفتار کرلیا تھا جبکہ 19 افراد کی لاشیں بھی برآمد کی گئی تھی۔تاہم تفتیش کے دوران درگاہ کے متولی 50 سالہ عبدالوحید نے 20مریدوں کے قتل کا اعتراف کیا ۔خیال رہے کہ 20 افراد کے قتل میں ملوث درگاہ کا متولی ملزم عبدالوحید الیکشن کمیشن آف پاکستان میں اعلیٰ عہدے پر فائز رہ چکا ہے۔ تاہم اب نسداد دہشت گردی کی عدالت نے 20 مریدین کو قتل کرنیوالے درگاہ کے متولی اور اس کے ساتھیوں کو سزائے موت سنادی۔درگاہ کے متولی عبدالوحید اور دیگر ساتھیوں ظفر ڈوگر، آصف اور کاشف گجر کو مجموعی طور پر 400 سال قید کی سزا سنائی گئی ہے اور اس کے ساتھ 5کروڑ روپے بطور جرمانہ قتل ہونیوالے افراد کے ورثا ء کو ادا کرنے کا حکم بھی جاری کردیا ہے۔