12:39 pm
پاکستان کے اہم شہر میں ڈاکٹر کے چہرے پر تیزاب پھینک دیا گیا

پاکستان کے اہم شہر میں ڈاکٹر کے چہرے پر تیزاب پھینک دیا گیا

12:39 pm

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک ) پاکستان کے اہم شہر میں ڈاکٹر کے چہرے پر تیزاب پھینک دیا گیا ۔۔۔لاہور کے علاقے نواں کوٹ میں نامعلوم افراد نے ایک ہومیو پیٹھک ڈاکٹر پر تیزاب پھنک دیا جس سے اس کا چہرہ جھلس گیا۔تیزاب گردی کا شکار ہونے والے ڈاکٹر کو فوری طور پر اسپتال منتقل کر دیا گیا۔تفصیلات کے مطابق عام طور پر خواتین تیزاب گردی کا شکار ہوتی ہیں۔خواتین پر مختلف وجوہات کی بنا پر تیزاب پھنکا جاتا ہے۔ اکثر و اوقات نوجوان لڑکیاں رشتے سے انکار پر تیزاب گردی
کا شکار ہو جاتی ہیں۔کبھی ذاتی دشمنی کی بنا پر بھی خواتین پر تیزاب پھینک دیا جاتا ہے۔تاہم آج لاہور میں ایک ایسا واقعہ پیش آیا ہے کہ جہاں ایک ڈاکٹر کے اوپر تیزاب پھینک دیا گیا۔بتایا گیا ہے کہ ڈاکٹر جاوید نواں کوٹ کے علاقے میں اپنے ہومیو پیتھک کلینک میں موجود تھے کہ نامعلوم افراد نے ان پر تیزابب پھینک دیا۔ تیزاب گردی کے واقعت میں ڈاکٹر جاوید کا چہرہ بری طرح جھلس گیا جس کے بعد انہیں فوری طور پر اسپتال منتقل کر دیا گیا۔جہاں انہیں طبی امداد دی جا رہی ہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ ملزمان کی گرفتاری کے لیے سی سی ٹی وی کیمروں سے مدد لی جا رہی ہے۔واضح رہے دو سال قبل ایک لڑکے نے اپنی منگیتر پر تیزاب پھینکا تھا۔ لاہور کے علاقے ڈیفنس میں اپنی منگیتر پر تیزاب پھیکنے کے واقعے کے بعد انسداددہشتگردی عدالت نے ملزم کو 38 سال قید سنائی تھی۔ انسداد دہشتگردی عدالت نے ملزم عصمت اللہ کو 38 سال قید اور ملزم کو 39 لاکھ روپے ہرجانہ ادا کرنے کا حکم بھی جاری کیا۔ ملزم عصمت اللہ نے غصہ میں آکر اپنی منگیتر پر ڈیفنس میں تیزاب پھینکا تھا بعدازاں پولیس نے ملزم کو گرفتار کرکے عدالت پیش کیا تھا۔جب کہ دوسری جانب سعودی عرب کی تاریخ میں ایک یسا واقعہ پیش آیا جس نے سب کو حیرت زدہ کر کے رکھ دیا ۔ یہ واقعہ بھی تیزاب گردی سے متعلق ہے جس میں کسی مرد نے خاتون پر تیزاب نہیں پھینکا، بلکہ ایک سعودی شوہر پر اُس کی تیسری بیوی نے تیزاب پھینک کر اُسے شدید زخمی کر دیا تھا ۔ پولیس نے یہ گھناؤنا کام کرنے والی خاتون کو گرفتار کر لیا تھا۔

تازہ ترین خبریں