05:17 pm
عدالت کا تحریک انصاف کے رُکن اسمبلی  کو گرفتار کرنے کا حکم، پارٹی میں ہلچل مچ گئی

عدالت کا تحریک انصاف کے رُکن اسمبلی کو گرفتار کرنے کا حکم، پارٹی میں ہلچل مچ گئی

05:17 pm

کراچی (نیوز ڈیسک ) عدالت نے پی ٹی آئی رہنماء حلیم عادل شیخ کو گرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم دے دیا، حلیم عادل کےخلاف پیپلزپارٹی کارکن کے اغواء اور تشدد کا مقدمہ درج ہے، عدالت نے ناقابل ضمانت وارنٹ جاری کرتے ہوئے حلیم عادل شیخ کو مفرور قراردے دیا۔ میڈیا رپورٹس کےمطابق عدالت نے
تحریک انصاف کے رہنماء حلیم عادل شیخ کو گرفتار کرکے25 جنوری کوپیش کرنے کا حکم دے دیا ہے۔بتایا گیا ہے کہ کنری تھانے میں حلیم عادل کے خلاف پیپلزپارٹی کارکن کے اغواء اور تشدد کرنے کا مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ حلیم عادل شیخ سمیت پی ٹی آئی کے5 رہنماؤں کوبھی مقدمے میں نامزد کیا گیا تھا۔ مقدمہ کی پیروی کیلئے حلیم عادل شیخ عدالت میں پیش نہیں ہورہے تھے۔جوڈیشل مجسٹریٹ نے حلیم عادل شیخ کے ناقابل ضمانت گرفتاری وارنٹ جاری کردیئے اور مقدمے میں پی ٹی آئی رہنماء حلیم عادل شیخ مفرور قرار دے دیا ہے۔دوسری جانب تحریک انصاف کے مرکزی نائب صدر و سندھ اسمبلی میں پارلیمانی لیڈر حلیم عادل شیخ نے کہا ہے کہ جنگل کا قانون سندھ میں چلنے نہیں دیں گے، آئی جی سندھ کی تبدیلی پر صوبائی حکومت نے وفاق سے باقاعدہ مشاورت نہیں کی۔ جو آئی جی ان کا غلط کام نہ کرے تو اس کو ہٹا دیا جاتا۔انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ سندھ حکومت کے ڈس انفارمیشن سیل کی جانب سے افواہ پھیلائی جارہی ہے کہ پولیس آرڈر 2019 کے تحت وفاق سے مشاوت ہوچکی ہے۔یہ جھوٹ ہے ان کی خواہشات ہوسکتی ہیں لیکن وفاق سے کوئی باقاعدہ مشاورت نہیں ہوئی ان کا کام ہے خواہشات کا اظہار کرناہے ہم اپوزیشن میں ہیں اپنے خدشات پیش کریں گیہم وفاق کو بتائیں گے کہ یہ جنگل کا قانون ہوگا کہ جو آئی جی ان کی بات نہ مانے تو ہٹا دیا جائے۔پی ٹی آئی رہنما نے مزیدکہا کہ آئی جی سندھ سندھ حکومت کے انتخاب پر آئے تھے ان کی سروس کا تین سالہ دورانیہ مکمل نہیں ہوا بنا کسی وجوہات کے آئی جی کو نہیں ہٹایا جاسکتا جو آئی جی ان کا غلط کام نہ کرے تو اس کو ہٹا دیا جاتا۔ اے ڈی خواجہ اور کلیم امام نے تھانہ کلچر کا خاتمہ کیا ہم تھانہ کلچر چلنے نہیں دیں گے۔

تازہ ترین خبریں