01:43 pm
سرکاری ملازمین پر اسمارٹ فون دفاتر میں لانے پر پابندی

سرکاری ملازمین پر اسمارٹ فون دفاتر میں لانے پر پابندی

01:43 pm

اسلام آباد(نیوز ڈیسک ) اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کی جانب سے نوٹس جاری کیا گیا ہے جس میں گریڈ1 سے گریڈ16 تک کے ملازمین پر سرکاری دفاتر میں اسمارٹ فون لانے پر پابندی لگائی گئی ہے۔ اس کے علاوہ سرکاری افسران کے ماتحت کام کرنے والے ملازم بھی اسمارٹ فون استعمال نہیں کر سکیں گے۔ اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کا کہنا ہے کہ یہ پابندی سیکیورٹی کے مسائل کو مدنظر رکھتے ہوئے لگائی گئی ہے ۔جاری کردہ نوٹس میں کابینہ ڈویژن کے نوٹس کا بھی ذکر کرتے ہوئے کہا گیا ہے
کہ تمام وزارتوں اور ماتحت اداروں میں بھی ایسا سرکلر جاری کیا جائے۔یاد رہے کہ اس سے قبل بھی ایسے نوٹس جاری ہوتے رہے ہیں۔کچھ دن قبل پنجاب حکومت کی جانب سے جاری کردہ نوٹس میں اپنے رہنماوں کو منع کیا گیا ہے کہ وہ کسی بھی قسم کے دستاویزات کا تبادلہ واٹس ایپ کے ذریعے نہ کریں کیونکہ اس طرح اہم معلومات لیک ہونے کا خطر ہ ہے۔اس کے علاوہ وفاقی کابینہ نے اعلیٰ حکومتی اور فوجی افسران کو بھی ہدایت کی تھی کہ وہ اپنے موبائل فونز تبدیل کر لیں کیونکہ ممکن ہے کہ کوئی خوفیہ جاسوس ایجنسی ہماری اہم معلومات حاصل کر لے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ اس طرح کی شکایات موصول ہوئی تھیں جس میں کہا جا رہا تھا کہ سرکاری افسران ڈیوٹی کے دوران موبائل فون کابہت زیادہ استعمال کرتے ہیں جس کی وجہ سے ان کا کام متاثر ہوتا ہے۔ساتھ ہی ساتھ یہ بھی شکایت درج کی گئی تھی کہ افسران دستاویزات کے تبادلے کے لئے واٹس ایپ کا استعمال کرتے ہیں جس سے ہماری معلومات لیک ہو جاتی ہیں۔ بتایا گیا تھا کہ دستاویزات شیئر کرنے کے لئے واٹس ایپ کروپس تشکیل دیئے گئے تھے جن میں دستاویزات کا تبادلہ کیا جاتا تھا۔ انہی تمام شکایات کو مدنظر رکھتے ہوئے اسٹیبلشمنٹ ڈویژن نے سرکاری ملازمیں پر دوران ڈیوٹی اسمارٹ فون لانے پر پابندی لگا دی ہے۔